فن فنکار

گیتا بالی نے پرس سے لپ اسٹک نکال کر کہا اس سے میری مانگ بھردیں: شمی کپور

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

ممبئی،۲۳؍اکتوبر- بالی ووڈ کے لیجنڈری ہیرو آنجہانی شمی کپور نہ صرف ایک اعلیٰ پائے کے اداکار تھے بلکہ عوامی سطح پر بھی انھیں بہت پسند کیا جاتا تھا، اپنے عہد کے میگا اسٹار نے اپنے فلمی کیریئر کا آغاز 1953 میں فلم ’جیون جیوتی‘ سے کیا تھا۔جس کے بعد انھوں نے کبھی پیچھے مڑ کر نہ دیکھا اور 1950 کے عشرے سے لیکر 1970 کی دہائی کے ابتدائی سالوں تک بالی ووڈ پر حکمرانی کی۔ اس عہد ساز ہیرو کی آج (21 اکتوبر) 90ویں سالگرہ منائی جارہی ہے۔ وہ صرف اداکاری میں ہی مہارت نہیں رکھتے تھے بلکہ ان کی اداکارہ گیتا بالی کے ساتھ پریم کہانی نے بھی ایک زمانے کا دل جیتا۔شمی کپور اور ان کی مستقبل کی اہلیہ گیتا بالی میں پہلی ملاقات فلم مس کوکا کولا 1955 کے دوران ہوئی، یہ فلم ہری اہلووالیہ کی پروڈکشن اور ہدایت کاری میں بنی۔فلم کے دوران شمی کپور نے محسوس کیا کہ وہ گیتا بالی کی زلفوں کے اسیر ہوگئے ہیں تو انھوں نے کئی مرتبہ گیتا کو شادی کا پیغام بھیجا، لیکن گیتا انھیں انکار کردیا۔ تاہم 23 اگست 1955 کو شمی کپور نے ممبئی کیجوہو ہوٹل میں انھیں ایک بار پھر پروپوز کیا، اور اس مرتبہ گیتا انھیں انکار نہ کرسکیں اور اس طرح دونوں کی شادی ہوگئی۔ میڈیا سے ایک پرانے انٹرویو میں شمی کپور نے بتایا تھا کہ انھیں پتہ تھا کہ گیتا اس مرتبہ بھی منع کرینگی لیکن حیرت انگیز طور پر وہ نہ صرف مان گئیں بلکہ کہا کہ ٹھیک میں تیار ہوں لیکن شادی اسی وقت ہوگی۔ شمی کپور کا کہنا تھا کہ انھوں نے گیتا کے ساتھ تین فلموں میں کام کیا اور اس دوران ہم دونوں ایک دوسرے کی محبت میں گرفتار ہوگئے، اس وقت وہ ٹاپ اسٹار اور میں کچھ نہ تھا، اس کے باوجود انھوں نے مجھے چاہا۔
شمی کپور نے کہا کہ ہم نے شادی کے پھیرے لیے جس کے بعد انھوں نے اپنی لپ اسٹک پرس سے نکال کر کہا کہ اس سے میری مانگ بھر دیجئے اور میں نے ایسا ہی کیا وہ بہت خوبصورت منظر تھا، ان کے انتقال کے بعد میں بالکل تنہا رہ گیا اور بکھر سا گیا۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper