کھیل

محمود اللہ نے باضابطہ طورپر ٹیسٹ کرکٹ کوالوداع کہا

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

ڈھاکہ، 26 نومبر- بنگلہ دیش کے اسٹار آل راؤنڈر محمود اللہ نے باضابطہ طور پر ٹیسٹ کرکٹ سے ریٹائرمنٹ لے لی ہے۔ بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ (بی سی بی) کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں محمود اللہ نے کہا، ’’اس فارمیٹ کو چھوڑنا آسان نہیں ہے جس کا میں اتنے عرصے سے حصہ رہا ہوں۔‘‘اپنے ساتھیوں کو یہ بتانے کے چار ماہ بعد کہ وہ اب مزید ٹیسٹ کرکٹ نہیں کھیلیں گے، بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ (بی سی بی) نے محمود اللہ کے فارمیٹ سے ریٹائر ہونے کی تصدیق کر دی ہے۔ محمود اللہ نے ہرارے میں زمبابوے کے خلاف بنگلہ دیش کے واحد ٹیسٹ کے تیسرے دن ٹیم کے ساتھ یہ بات چیت کی تھی اور میچ کی آخری صبح انہیں گارڈ آف آنرملاتھا۔اگرچہ کھیل سے ریٹائر ہونا حقیقی معنوں میں سرکاری حیثیت میں نہیں آتا، تاہم جاری ٹیسٹ میچ کے درمیان محمود اللہ کا ریٹائرمنٹ لینا بورڈ کے چیئرمین نظم الحسن کوراس نہیں آیاتھا۔
یہاں تک کہ جب جولائی میں اس ٹیسٹ میچ کے آخری دن، تمام کھلاڑیوں کے ذریعہ اپنے سینئر کھلاڑی کو الوداع کرنے کے باوجود، اب تک بی سی بی کی جانب سے ان کے فیصلے کی کوئی حیثیت نہیں تھی۔ایک پریس ریلیز میں، بورڈ نے ٹیسٹ کرکٹ کے لیے محمود اللہ کی خدمات پر شکریہ ادا کیا۔
لیکن اس بات کا ذکر نہیں کیا کہ انھوں نے جولائی میں ہی ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا تھا۔ محمود اللہ کا بیان بھی اس ریلیز میں شامل تھا جہاں انہوں نے زمبابوے کے خلاف ٹیسٹ ٹیم میں واپسی کروانے کے لئے بی سی بی کے صدر حسن کا شکریہ ادا کیا۔محمود اللہ نے کہا کہ جس فارمیٹ کا میں اتنے عرصے سے حصہ رہا ہوں اسے چھوڑنا آسان نہیں ہے۔
میں نے ہمیشہ اچھے وقت پر یہ فیصلہ کرنے کے بارے میں سوچا تھااور میراخیال ہے کہ یہ میرے ٹیسٹ کیریئر کو ختم کرنے کا صحیح وقت ہے۔ جب میں ٹیسٹ ٹیم میں واپس آیا تب میرا تعاون کرنے کے لئے میں بی سی بی کا شکریہ ادا کرنا چاہتا تھا۔انہوں نے مزید کہا، “میں ہمیشہ میری حوصلہ افزائی کرنے اور میری صلاحیتوں پر یقین کرنے پر اپنے ساتھیوں اور معاون عملے کا شکریہ ادا کرتا ہوں۔ بنگلہ دیش کے لیے کھیلنا ایک مکمل اعزاز اور خوش قستی کی بات ہے اور میں ان یادوں کوہمیشہ اپنے دل میں کھوں گا۔” میں ٹیسٹ سے ریٹائر ہو رہا ہوں، لیکن میں ون ڈے اور ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلتا رہوں گا۔ میں وائٹ بال کرکٹ میں اپنے ملک کے لیے اپنی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ جاری رکھوں گا۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper