کھیل

بھارتی ٹیم پہلے ہی کیپ ٹاؤن ٹیسٹ میں شکست تسلیم کر چکی تھی

Written by Taasir Newspaper

نئی دہلی ،15جنوری ۔کیپ ٹاؤن ٹیسٹ میچ کے چوتھے دن جنوبی افریقہ کے خلاف ٹیم انڈیا کا انداز اچھا نہیں رہا۔ یہ دعویٰ سابق کرکٹر اور موجودہ کرکٹ ماہر سنیل گواسکر نے کیا ہے اور وہ اس سے ناخوش بھی ہیں۔ میچ کے چوتھے دن جنوبی افریقہ کو جیت کے لیے 111 رن درکار تھے اور ٹیم انڈیا کو یہ میچ جیتنے کے لیے 8 وکٹوں کی ضرورت تھی، لیکن ٹیم صرف ایک ہی وکٹ لے سکی۔ کمنٹری باکس سے میچ کی کمنٹری کرنے والے سنیل گواسکر نے چوتھے دن بھارت کی غلطی کا انکشاف کیا۔ جنوبی افریقہ کی ٹیم نے 212 رن کا ہدف باآسانی 63.3 اوور میں حاصل کر لیا۔ کیگن پیٹرسن نے دونوں اننگ میں نصف سنچریاں اسکور کیں اور اسی وجہ سے انہیں میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔ اس کے ساتھ ہی سنیل گواسکر نے حیرانی کا اظہار کیا کہ ہندوستانی ٹیم نے جسپریت بمر ہ اور شاردول ٹھاکر کو صحیح وقت پر استعمال نہیں کیا، جب وکٹ کی ضرورت تھی۔ تجربہ کار بلے باز بھی ہندوستان کی فیلڈ پلیسمنٹ سے ناراض نظر آئے، کیوں کہ ٹیم انڈیا نے آسانی سے رن دے دیے۔ یہی وجہ تھی کہ جنوبی افریقہ نے دباؤ نہیں نظر نہیں آیا۔ سنیل گواسکر نے اسٹار اسپورٹس پر کہا، “یہ میرے لیے ایک معمہ تھا کہ شاردول ٹھاکر اور جسپریت بمر ہ کو لنچ کے بعد باؤلنگ کرنے کی اجازت کیوں نہیں دی گئی۔ ایسا لگ رہا تھا جیسے ہندوستان نے فیصلہ کر لیا ہو کہ وہ یہ میچ نہیں جیتے گا۔ اشون کے لئے جوفیلڈ پلیسمنٹ تھی وہ اچھی نہیں تھی۔ سنگلز آسانی سے دستیاب تھے۔ پانچ فیلڈرس کو ڈیپ میں لگائیں اور بلے بازوں کو موقع دیں۔ انہیں آؤٹ کرنے کا آپ کے پاس یہی موقع ہے ۔” گواسکر نے جنوبی افریقہ کی ٹیم کے بلے بازوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔

About the author

Taasir Newspaper