ریاست

جھارکھنڈ: نکسلیوں نے گریڈیہہ میں ریلوے ٹریک کو دھماکے سے اڑا یا

Written by Taasir Newspaper

گریڈیہہ، 27 جنوری۔نکسلیوں نے بدھ کی رات دیر گئے جھارکھنڈ کے گریڈیہہ کے قریب ریلوے ٹریک کو دھماکے سے اڑا دیا۔ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی احتیاطی اقدام کے طور پر ہاوڑہ-گیا-دہلی ریل روٹ پر ٹرینوں کی آمدورفت روک دی گئی ہے۔ اس کے ساتھ ہی کچھ ٹرینوں کے روٹس میں بھی تبدیلی کی گئی ہے۔ تاہم ریلوے ٹریک کو کوئی بڑا نقصان نہیں پہنچا۔سی پی آئی-ماؤسٹوں نے لوگوں میں خوف پھیلانے کے لیے جمعرات کو جھارکھنڈ-بہار بند کی کال دی ہے۔ اس کے تحت گریڈیہہ میں دھنباد گیا ریلوے سیکشن کے تحت سریا تھانہ علاقہ کے چیچاکی اور چودھری ڈیم کے درمیان نئی دہلی ہاوڑہ ریل لائن کے اپ اور ڈاؤن ٹریک کو دھماکے سے اڑا دیا گیا۔ جس کی وجہ سے ان روٹس پر ٹرینوں کی آمدورفت میں خلل پڑا۔ گھنٹوں کی جدوجہد کے بعد ٹرینوں کی آمدورفت معمول پر آگئی۔ ساتھ ہی چترا میں نکسلیوں کے خوف کی وجہ سے سڑک متاثر ہے۔ نکسلائیٹ پرشانت شیلا کی رہائی کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ سی پی آئی-ماؤسٹ کے سرکردہ لیڈر پرشانت بوس اور ان کی اہلیہ شیلا کی گرفتاری کے بعد سے نکسل تنظیمیں ناراض ہیں، نکسلی تنظیم کی طرف سے ان کی گرفتاری کے بعد دو بار بند کی کال دی گئی ہے۔ تنظیم دونوں کی رہائی اور صحت کی بہتر سہولیات کا مطالبہ کر رہی ہے۔ تنظیم نے بند سے پہلے 21 جنوری سے 26 جنوری تک یوم مزاحمت منایا۔ اس دوران پل، موبائل ٹاور کو نقصان پہنچانے کے ساتھ ساتھ یوم جمہوریہ پر کئی مقامات پر سیاہ جھنڈے لہرائے گئے۔ بتایا جاتا ہے کہ ماؤنواز دستہ تقریباً12:15 بجے گریڈیہہ پہنچا۔ پول نمبر 334/13 اور 14 کے درمیان ریلوے ٹریک پر ہونے والے دھماکے سے ٹریک اڑا دیا۔ اس موقع پر یوم احتجاج اور اسیر فارم بھی جاری کیا گیا۔ جمعرات کی صبح واقعہ کی اطلاع ملتے ہی سریا بگودر اور دیگر اضلاع کی پولیس موقع پر پہنچ گئی۔ اس کے بعد ریلوے ملازمین نے ٹریک کی مرمت کر کے ٹرینیں چلانا شروع کر دیں۔ ان ٹرینوں کا آپریشن متاثر ہوا۔ واقعے کی وجہ سے اس راستے سے گزرنے والی ٹرینوں کی آمدورفت میں خلل پڑا۔ چودھری ڈیم اسٹیشن پر گنگا-دامودر ایکسپریس، ہزاری باغ روڈ اسٹیشن پر جودھ پور-ہاؤڑا ایکسپریس، پارس ناتھ اسٹیشن پر ہٹیا اسلام آباد ایکسپریس اور ہاوڑہ ممبئی میل، لوک مانیہ تلک ایکسپریس اور دیگر کئی ٹرینیں مختلف اسٹیشنوں پر تقریباً 3 گھنٹے تک رکی رہیں۔ واقعے کے بعد پولیس اور سی آر پی ایف نے آس پاس کے علاقے میں تلاشی مہم شروع کی۔ چترہ میں ٹریفک کا نظام مکمل طور پر متاثر چترا ضلع میں سی پی آئی-ماؤسٹ کا بہت زیادہ اثر ہے۔
ٹریفک کا نظام مکمل طور پر متاثر ہے۔ سامان بردار اور مسافر گاڑیاں کام نہیں کر رہی ہیں۔ سڑکوں پر خاموشی ہے۔ ضلع ہیڈکوارٹر سے رانچی، ہزاری باغ، گیا، کوڈرما، چوپارن اور دیگر مقامات پر چلنے والی مسافر بسوں کے پہیوں کو بریک لگا دی گئی ہے۔ بس اور ٹیکسی اسٹینڈز پر مسافر پریشان ہیں۔ قابل ذکر ہے کہ نکسلی تنظیم کی گرفتاری کے بعد اسے دو بار بند کیا جا چکا ہے۔ اس بار 21 جنوری سے 26 جنوری تک یوم احتجاج دونوں کی رہائی کے مطالبے کے لیے منایا گیا۔ نکسلیوں نے یوم جمہوریہ پر تین اضلاع میں دلیری دکھائی جھارکھنڈ میں یوم جمہوریہ کے موقع پر نکسلیوں نے تین اضلاع میں دلیری دکھائی۔ نکسلیوں نے کئی سرکاری عمارتوں اور احاطوں میں جمہوریہ کے خلاف احتجاج میں سیاہ پرچم لہرائے۔ اس کے علاوہ ماؤنوازوں نے ہزاری باغ کے بشنو گڑھ میں ایک موبائل ٹاور کو دھماکے سے اڑا دیا۔ گریڈیہہ کے ڈمری اور مدھوبن علاقوں میں پرچم لہرایا گیا۔ اس کے ساتھ ہی گملا کے بشنو پور میں اسکول میں کالا جھنڈا لگایا گیا۔

About the author

Taasir Newspaper