ریاست

حکومت نے کوویڈ کیسز میں اضافے کے بعد جموں و کشمیر میں ویک اینڈ لاک ڈاؤن دوبارہ نافذ کیا

Taasir Newspaper
Written by Taasir Newspaper

سرینگر ،15؍جنوری(جاوید احمد)جنوری میں کوویڈ کے معاملات میں اچانک اضافے کے بعد، حکومت نے وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے جموں و کشمیر میں ویک اینڈ لاک ڈاؤن دوبارہ نافذ کر دیا ہے۔جموں و کشمیر کے چیف سکریٹری ارون کمار مہتا کی سربراہی میں ریاستی ایگزیکٹو کمیٹی کی طرف سے جاری کردہ ایک حکم میں کہا گیا ہے، “پورے جموں و کشمیر میں اختتام ہفتہ کے دوران غیر ضروری نقل و حرکت پر مکمل پابندی ہوگی۔”اس میں کہا گیا تھا کہ روزانہ کوویڈ کیسز میں دیکھے جانے والے رجحان کے ساتھ ساتھ بڑھتی ہوئی شرح کے پیش نظر تمام اضلاع میں موجودہ کوویڈ کنٹینمنٹ اقدامات کو جاری رکھنے کے علاوہ اضافی اقدامات کی ضرورت تھی۔حکم نامے میں کہا گیا ہے کہ تمام اضلاع میں رات 9 بجے سے صبح 6 بجے تک غیر ضروری نقل و حرکت پر مکمل پابندی کے ساتھ نائٹ کرفیو جاری رہے گا۔جموں و کشمیر میں گزشتہ 10 دنوں میں کووڈ کیسز میں 10 گنا اضافہ ہوا ہے۔جموں و کشمیر میں کل سب سے زیادہ 2,456 کوویڈ کیسز دیکھنے میں آئے، جس سے مرکز کے زیر انتظام علاقے میں کل فعال کیسوں کی تعداد 10,003 ہوگئی جس میں کشمیر میں 5201 اور جموں خطے میں 4,802 شامل پانچ اموات کی بھی اطلاع ملی، جس سے جموں و کشمیر میں کوویڈ سے مرنے والوں کی تعداد 4557 ہوگئیکووڈ کیسز میں اضافے کے پیش نظر حکام نے تمام ہیلتھ کیئر ورکرز کی چھٹیاں منسوخ کر دی ہیں۔
اور ڈاکٹروں کی موسم سرما کی چھٹیاں بھی منسوخ کر دی ہیں۔جموں و کشمیر کے تمام بڑے اسپتالوں میں آؤٹ ڈور پیشنٹ ڈپارٹمنٹ (او پی ڈی) خدمات اور انتخابی سرجریوں کو روک دیا گیا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper

Taasir Newspaper