ہندستان

ہندوستانی ادارے ملک شبیہ خراب کرنے کی سازشوں کو بے نقاب کریں: وزیر اعظم مودی

Written by Taasir Newspaper

نئی دہلی، 20 جنوری۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے جمعرات کے روز بین الاقوامی سطح پر کام کرنے والی ہندوستانی تنظیموں سے اپیل کی کہ وہ ہندوستان کی شبیہ کو خراب کرنے کی عالمی سطح پر ہونے والی سازشوں کا مقابلہ کرتے ہوئے دنیا کے سامنے ملک کی صحیح تصویر پیش کریں۔
برہما کماری سنستھا کے ‘آزادی کے امرت مہوتسو سے سورنم بھارت کی اور’ پروگرام کا افتتاح کرتے ہوئے، وزیر اعظم نے کہا کہ سال بھر چلنے والے پروگرام میں سنہری ہندوستان کے لیے جذبہ اورکوشش ، دونوں ہیں۔ اس میں ملک کے لئے ترغیب بھی ہے اور برہما کماریوں کی کوششیں بھی۔ انہوں نے کہا کہ یہ پروگرام ملک کے لیے باعث ترغیب ہے۔ وزیر اعظم نے ملک کی ترقی میں مسلسل تعاون کے لیے برہما کماری سنستھا کا شکریہ ادا کیا۔
انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی سطح پر ہندوستان کی شبیہ کو خراب کرنے کی مختلف کوششیں چلتی رہتی ہیں۔ ہم اس سے یہ کہہ کر نہیں بچ سکتے کہ یہ صرف سیاست ہے۔ یہ سیاست کا نہیں ہمارے ملک کا معاملہ ہے۔ آزادی کا امرت مہوتسو مناتے ہوئے یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ دنیا ہندوستان کو صحیح طریقے سے جانے۔ برہما کماری جیسے اداروں کو ہندوستان کی سچی باتوں کو دوسرے ممالک کے لوگوں تک پہنچانا چاہئے۔ انہیں بھارت کے بارے میں پھیلائی جانے والی افواہوں کی حقیقت بتا کر اپنا فرض ادا کرنا چاہیے۔
وزیراعظم نے ملک کے ہر شہری کو اپنے دل میں فرض شناسی کا دیاجلانے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ہم مل کر ملک کو آگے لے کر جائیں گے جس سے معاشرے میں پھیلی برائیاں ختم ہوں گی اور ملک نئی بلندیوں کو چھوئے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایسا نظام بنا رہے ہیں جہاں تفریق کی بجائے مساوات ہو۔ انہوں نے فرائض کی بجائے صرف حقوق کی بات کرنے کو ملک کے لیے مہلک قرار دیا اور کہا کہ آزادی کے 75 برسوں میں ایک برائی نے ہمارے معاشرے اور قوم میں سب کے اندر گھر کر گئی ہے ۔یہ برائی ہے، اپنے فرائض سے انحراف کرنا، اپنے فرائض کو مقدم نہ رکھنا ہے۔
انہوں نے کہا کہ امرت کال کا یہ وقت سوتے ہوئے خواب دیکھنے کا نہیں ہے بلکہ جاگ کر اپنے عزم کو پورا کرنے کا ہے۔ آنے والے 25 سال محنت کی انتہا، قربانی،تپ تپسیاکے 25سال ہیں۔سیکڑوں سال کی غلامی میں ہمارے معاشرے نے جوکھویا ہے ، یہ 25سال کا دوراسے دوبارہ حاصل کرنے کا ہے۔
انہوں نے کہا کہ جب دنیا تاریکی کے گہرے دور میں تھی، خواتین کے بارے میں پرانی سوچ میں پھنسی ہوئی تھی، اس وقت ہندوستان دیوی کے روپ میں ماں شکتی کی پوجا کرتا تھا۔ ہمارے یہاںگارگی، میتری، انوسویا، اروندھتی اور مدالسا جیسی ودوشیاںسماج کو علم دیتی تھیں۔ یہاں تک کہ قرون وسطی کے مشکل دور میں بھی اس ملک میں پننادھائے اور میرا بائی جیسی عظیم خواتین تھیں۔ امرت مہوتسو میں ملک جدوجہد آزادی کی تاریخ کو یاد کر رہا ہے، اس میں بھی بہت سی خواتین نے اپنی قربانیاں دی ہیں۔ کتور کی رانی چنما، متنگنی ہازرا، رانی لکشمی بائی، ویرانگنا جھلکاری بائی سے لے کر اہلیابائی ہولکر اور ساوتری بائی پھولے تک سماجی میدان میں ان دیویوں نے ہندوستان کی شناخت کو برقرار رکھا۔
وزیر اعظم نے پہلے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے برہما کماری سنستھا کی طرف سے آزادی کے امرت مہوتسو کے لیے وقف کردہ سال بھر کے اقدامات کی نقاب کشائی کی تھی، جس میں 30 سے زیادہ مہمات، 15,000 سے زیادہ تقریبات اورپروگرام شامل ہیں۔ وزیر اعظم نے برہما کماری کی سات پہل کو ہری جھنڈی دکھا ئی ۔ ان اقدامات میں ‘میرا بھارت سوستھ بھارت’، آتم نربھار بھارت:آتم نربھر کسان،مہیلائیں: بھارت کی دھوج واہک، شانتی بس ابھیان کی شکتی، ان دیکھا بھارت سائیکل ریلی، یونائیٹڈ انڈیا موٹر بائیک مہم اور سوچھ بھارت ابھیان کے تحت ہرت پہل شامل ہیں۔

About the author

Taasir Newspaper