کھیل

آئی پی ایل پلے آف میں جگہ یقینی بنانے کیلئے آمنے سامنے ہوں گے گجرات اور لکھنؤ

Written by Taasir Newspaper

پونے، 9 مئی- اپنے پہلے سیزن میں شاندار کارکردگی کے بعد گجرات ٹائٹنز اور لکھنؤ سپر جائنٹس منگل کو انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) میں ایک دوسرے کے آمنے سامنے ہونے پر پلے آف میں جگہ محفوظ کرنے کے خواہاں ہوں گے۔گجرات زیادہ تر وقت لیگ میں سرفہرست رہے لیکن بلے بازوں کی ناکامی کی وجہ سے اسے آخری دو میچوں میں شکست کا منہ دیکھنا پڑا۔ ساتھ ہی لکھنؤ اپنی جگہ ٹاپ پر پہنچ گیا ہے۔تاہم ان دونوں ٹیموں کے 16 پوائنٹس برابر ہیں اور یہ میچ جیتنے والی ٹیم کی پلے آف میں جگہ یقینی ہو جائے گی۔
ہاردک پانڈیا کی زیرقیادت گجرات گزشتہ ہفتے پنجاب کنگز اور ممبئی انڈینس سے ہار گئے۔ دوسری طرف لکھنؤ نے اپنے آخری چار میچ جیتے ہیں۔ ان میں گزشتہ میچ میں کولکتہ نائٹ رائیڈرز (کے کے آر) کے خلاف 75 رنز کی فتح بھی شامل ہے، جس کی وجہ سے لکھنؤ کی ٹیم بڑھے ہوئے حوصلے کے ساتھ میدان میں اترے گی۔کے ایل راہل نے آگے سے لکھنؤ کی قیادت کی ہے، وہ اب تک 11 میچوں میں 451 رنز بنا چکے ہیں جس میں دو سنچریاں اور نصف سنچریاں شامل ہیں۔
لکھنؤ کی ٹیم بیٹنگ میں ان پر بہت زیادہ انحصار کرتی ہے لیکن حالیہ میچوں میں کوئنٹن ڈی کاک اور دیپک ہڈا نے زیادہ ذمہ داری لی ہے جس سے راہل کا بوجھ ہلکا ہوا ہے۔
لکھنؤ کے گیند باز بھی اچھی کارکردگی دکھا رہے ہیں۔ پنجاب کنگز کے خلاف، جہاں اس نے 153 رنز کا عمدہ دفاع کیا، کے کے آر کو صرف 101 رنز بنانے کی اجازت ملی۔ اس میچ میں تیز گیند باز اویش خان اور جیسن ہولڈر نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔
فاسٹ باؤلرز محسن خان، کرونل پانڈیا اور سری لنکا کے دشمنت چمیرا نے کفایتی بولنگ کی۔ روی بشنوئی البتہ آخری میچ میں قدرے مہنگے ثابت ہوئے۔جہاں تک گجرات کا تعلق ہے، اس نے مشکل حالات میں واپسی کرکے اپنی پوزیشن مضبوط کی ہے۔ اس کے مختلف کھلاڑی اب تک میچ ونر کھیل چکے ہیں، لیکن ممبئی کے خلاف ایسا نہیں ہوا جب وہ آخری اوور میں نو رنز بنانے میں ناکام رہے۔
گجرات کے بلے بازوں کو تسلسل برقرار رکھنے کی ضرورت ہے۔ ان کے ٹاپ آرڈر بلے باز لمبی اننگز کھیلنے کے قابل نہیں ہیں۔ شبمن گل تو چمک نہیں پائے لیکن ردھیمان ساہا نے اپنے ارادوں کو بخوبی بتا دیا ہے۔

 

About the author

Taasir Newspaper