ریاست

ڈیری سیکٹر میں کام کی خواہاں کمپنیوں کی کریں گے مدد:یوگی

Written by Taasir Newspaper

لکھنؤ:21مئی: اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے ہفتہ کو کہا کہ ڈیری سیکٹر میں کام کرنے کی خواہاں کمپنیوں کی ریاستی حکومت ہر ممکن تعاون فراہم کرے گی۔یوگی نے یہاں ایک اعلیٰ سطحی جائزہ میٹنگ میں کہا کہ ڈیری سیکٹر میں روزگار اور آمدنی کے بڑے امکانات کو دیکھتے ہوئے حکومت پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ (پی پی پی) ماڈل کے ذریعے ڈیری یونٹ کھولنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔ ڈیری سیکٹر کو مضبوط بنانا حکومت کی اولین ترجیحات میں شامل ہے۔ ڈیری سیکٹر میں زیادہ سے زیادہ نوجوانوں کو شامل کرنے کے لیے منصوبہ بند کوشش کریں۔انہوں نے کہا کہ حکومت پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ ماڈل کے تحت یہاں ڈیری سیکٹر میں کام کرنے کی خواہشمند کمپنیوں کو مکمل تعاون فراہم کرے گی۔ حکومت کے اس قدم سے کسانوں کو فصل کی کاشت کے ساتھ ساتھ ڈیری کے کاروبار میں بھی مدد ملے گی۔ نئے ڈیری یونٹس کھولنے سے حکومت کو ریونیو بھی ملے گا۔محکمہ مویشی پروری کے کام کاج میں جامع اصلاحات کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے ہدایت دی کہ محکمہ کے سرکاری افسران کو نوڈل افسر کے طور پر اضلاع میں بھیجا جائے۔ انہوں نے ان پر زور دیا کہ وہ اضلاع میں گوشالوں اور بھوسا بینکوں یا چارہ بنکوں میں زیادہ سے زیادہ سہولیات کو یقینی بنائیں۔انہوں نے کہا کہ گائے کی اسمگلنگ جیسے گھناؤنے جرائم میں ملوث افراد کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔ڈیری سیکٹر اور مویشی پروری کسانوں کی حالت بہتر بنانے میں بڑا کردار ادا کر سکتے ہیں۔ اس سے گاؤں میں غربت اور عدم مساوات میں کمی آئے گی اور غریب دیہی خاندانوں کو غذائیت بھی میسرہوگ گی۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ مویشی پروری ریاست کے چھوٹے کسانوں کے لیے اضافی آمدنی کا ایک بڑا ذریعہ بن سکتا ہے اور یہ خواتین کو معاشی طور پر بااختیار بنانے کا ایک بہترین ذریعہ ہے۔

About the author

Taasir Newspaper