بہار

بہار قانون سازیہ کا مانسون اجلاس کا تیسرا دن اگنی پتھ اکو لیکر اپوزیشن اور جے ڈی یو کا ایوان سے واک وائوٹ

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Mosherraf- 28 June

پٹنہ،28جون:بہار اسمبلی میں مانسون اجلاس کے تیسرے دن بھی اگنی پتھ اسکیم کو لے کر ہنگامہ جاری رہا۔ اہم اپوزیشن پارٹی آر جے ڈی نے صاف کر دیا ہے کہ وہ اگنی پتھ ایشو کو نہیں چھوڑنے والی ہے۔ منگل کو بہار اسمبلی احاطہ میں داخل ہوتے ہی آر جے ڈی، کانگریس اور سی پی ایم اراکین اسمبلی نے نوجوانوں کو روزگار دینے اور اگنی پتھ اسکیم کو واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے تختیاں لے کر مظاہرہ شروع کر دیا۔اس سے قبل پیر کو اپوزیشن پارٹیوں نے اس منصوبہ کو واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے ایوان میں خوب ہنگامہ کیا تھا۔ اپوزیشن پارٹیوں کے اراکین ویل میں جا کر منصوبہ کی مخالفت کرتے ہوئے نظر آئے۔ شور شرابہ کے درمیان اسمبلی اسپیکر وجئے کمار سنہا لگاتار ناراض اراکین اسمبلی کو ہنگامہ بند کرنے کی اپیل کرتے رہے، لیکن ان پر اس کا کوئی اثر نہیں ہوا۔ اپوزیشن پارٹیوں کے اراکین اگنی پتھ اسکیم کو واپس لینے کا مطالبہ کر رہے تھے۔غور طلب ہے کہ مرکزی وزیر دفاع راجناتھ سنگھ کے ذریعہ 15 دن قبل اگنی پتھ اسکیم کا اعلان کیا گیا تھا۔ اس کے اگلے دن سے ہی پورے ملک میں اس اسکیم کو لے کر مظاہرہ شروع ہو گیا۔ بہار میں بھی پرتشدد مظاہرے ہوئے۔ بی جے پی کے کئی لیڈران کو مظاہرین نے اپنا نشانہ بھی بنایا تھا۔ احتجاجی مظاہرہ کے نام پر مظاہرین نے دو اضلاع میں بی جے پی دفتر میں آگ لگا دی تھی جب کہ نائب وزیر اعلیٰ رینو دیوی اور بی جے پی ریاستی صدر سنجے جیسوال سمیت کئی سینئر لیڈروں کے گھروں اور گاڑیوں کو بھی نشانہ بنایا گیا تھا۔ادھربہار اسمبلی میں بہترین ایم ایل اے کے کے انتخاب کے طریقے پر بحث کے دوران زیادہ تر اراکین کی غیر حاضری کی وجہ سے آج وقفہ طعام کے بعد ایوان کی کاروائی مقررہ وقت سے قبل ہی ملتوی کر دی گئی۔
ادھر اپوزیشن لیڈر تیجسوی یادو نے اخباری نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ایوان جمہوریت کا مندر ہے لیکن یہاں بولنے کی اجازت نہیں ہے، تو ہم اپوزیشن کے تمام اراکین ایوان کا بائیکاٹ کریںگے ،اور وقفہ طعام کے بعد اپوزیشن کے علاوہ حکمرا ں جے ڈی یو کے تمام اراکین ایوان سے غیر حاضر تھے۔کل جن نائک کرپوری ٹھاکر کے مجسمہ کے پاس دھرنا دینے کا پروگرام بنایا ہے۔اسمبلی اسپیکر وجے کمار سنہا نے ایوان کی کاروائی وقفہ طعام کے بعد شروع ہونے پرکہاکہ بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی) کے رکن سنجے سراؤگی کی جانب سے بہترین اسمبلی اور بہترین رکن اسمبلی کے انتخاب کے طریقے پر بحث کیلئے تجویز دی گئی تھی۔ انہوں نے کہاکہ بحث مفادعامہ میںہے اور ان کی ہدایت پر رکن اسمبلی مسٹر سراؤگی نے بحث کی شروعات کی۔مانسون اجلاس کے تیسرے دن بہار قانون ساز اسمبلی کی کارروائی جہاں ایک طرف اگنی پتھ اسکیم کو لے کر اپوزیشن کی مخالفت سے بھٹک گئی۔ دوسری طرف جب دوپہر کو ایوان کی کارروائی شروع ہوئی تو جے ڈی یو کے ارکان بھی باہر رہے۔ منگل کو لنچ کے وقفے کے بعد دو بجے ایوان کی کارروائی پرامن طریقے سے چلی، لیکن اس دوران جے ڈی یو کا ایک بھی ایم ایل اے ایوان میں موجود نہیں تھا۔ اسمبلی میں بقایا ایم ایل اے کے بارے میں بحث ہوئی۔ یہ بحث بی جے پی ایم ایل اے سنجے سراوگی کی تجویز پر شروع ہوئی۔ جے ڈی یو ایم ایل اے کو اسمبلی کے ریڈنگ روم میں بلایا گیا۔ اسمبلی میں موجود تین وزرا سنیل کمار، شیلا منڈل اور مدن ساہنی بھی کال کے بعد ایوان سے نکل گئے۔ اس کے بعد اسپیکر وجے سنہا نے غصے میں ایوان کی کارروائی بدھ کی صبح 11 بجے تک ملتوی کر دی۔

About the author

Taasir Newspaper