ملک بھر سے

شرد پوار کا مہاراشٹرا بحران پردو ٹوک موقف کہا ، کس کی پاس اکثریت ہے ،فیصلہ ایوان میں فلور ٹیسٹ سے ہو گا

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Mosherraf-23 June

ممبئی،23 جون : مہاراشٹر میں سیاسی بحران کے درمیان نیشنلسٹ کانگریس پارٹی کے سربراہ شرد پوار نے کہا ہے کہ فلور ٹیسٹ فیصلہ کرے گا کہ کس کے پاس اکثریت ہے۔ پوار نے کہا کہ موجودہ صورتحال شیوسینا عوام پر واضح کر دے گی۔ جب اسمبلی میں فلور ٹیسٹ ہو گا تو پتہ چل جائے گا۔ جو حالات پیدا ہوئے ہیں ہم ان پر فتح حاصل کریں گے۔ پورا ملک جان لے گا کہ ادھو ٹھاکرے کی قیادت میں یہ حکومت چلے گی یا نہیں۔ ریاست میں سیاسی بحران کے سلسلے میں نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) کی طرف سے بلائی گئی میٹنگ میں سی ایم ادھو ٹھاکرے کی مکمل حمایت کا اظہار کیا گیا۔ این سی پی لیڈر اور ڈپٹی سی ایم اجیت پوار نے کہا کہ مہاراشٹر میں جو بھی سیاسی صورتحال پیدا ہوئی ہے ہم پوری طرح ادھو ٹھاکرے کے ساتھ کھڑے ہیں۔دوسری طرف کانگریس نے بھی کہا ہے کہ ان کی پارٹی مہاوکاس اگھاڑی کے ساتھ کھڑی ہوگی۔ کانگریس کے سینئر لیڈر ملکارجن کھرگے نے کہا ہے کہ میری پارٹی مہاوکاس اگھاڑی کے ساتھ کھڑی رہے گی، ہم مل کر کام کرنا چاہتے ہیں۔ مہا وکاس اگھاڑی مہاراشٹر کی ترقی کے لیے بنائی گئی تھی۔ ہمیں امید ہے کہ حکومت رہے گی اور باغی ایم ایل اے واپس آجائیں گے، بی جے پی مہاراشٹر حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ وہ اس سے قبل کرناٹک، مدھیہ پردیش اور گوا میں بھی کر چکے ہیں۔غور طلب ہے کہ مہاراشٹر کے سیاسی بحران میں ایکناتھ شندے کی قیادت میں باغی دھڑے کی طاقت مسلسل بڑھ رہی ہے اور تقریباً 40 ایم ایل اے اس کی حمایت میں آچکے ہیں۔ حالات کو ہاتھ سے نکلتے دیکھ کر شیو سینا بیک فٹ پر نظر آ رہی ہے۔ شندے دھڑے نے مطالبہ کیا ہے کہ شیوسینا کانگریس اور این سی پی کے ساتھ اتحاد ختم کرے اور پرانی حلیف بی جے پی کے ساتھ دوبارہ حکومت بنائے۔ شیو سینا سینا کے ترجمان اور ایم پی سنجے راوت نے ٹویٹ کیا ہے، جس میں انہوں نے باغی ایم ایل ایز سے بات چیت کے ذریعے معاملہ حل کرنے کی اپیل کی ہے۔ باغی ایم ایل اے کو مخاطب کرتے ہوئے اس ٹویٹ میں کہا گیا ہے کہ بات چیت سے کوئی راستہ نکل سکتا ہے۔دروازے کھلے ہیں۔ باہر کیوں گھوم رہے ہو؟ غلامی جھیلنے سے بہتر ہے عزت نفس کے ساتھ فیصلہ کریں۔

About the author

Taasir Newspaper