ملک بھر سے

کشمیر ی عوام کے حقوق کی بحالی کیلئے متحدہ آئینی، سیاسی جدوجہد کی ضرورت: فاروق عبداللہ

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Mosherraf- 1st July

جموں، یکم جولائی: نیشنل کانفرنس کے سرپرست اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے جمعہ کے روز کہا کہ جموں وکشمیر کے عوام کے مفادات اور احساسات کا دفاع کرنا اور چھینے گئے۔ آئینی اور جمہوری حقوق کی بحالی نیشنل کانفرنس کا بنیادی ایجنڈا ہے اور ہماری جماعت مستقبل میں اسی اصول پر قائم و دائم رہے گی۔انہوں نے کہاکہ شیر کشمیر کی یہ جماعت عوامی اشتراک اور تعاون سے ان تمام عناصر کو دھول چٹائے گی جو اعلاناً یا درپردہ جموں وکشمیر کے عوام کے حقوق سلب کرنے میں ملوث رہے ہیں ،اور یہاں کے عوام کو مذہب، علاقائی اور لسانی بنیاوں پر تقسیم کرنے پر آمادہ ہیں۔ان باتوں کا اظہارموصوف نے اپنی رہائش پر مختلف عوامی وفود کیساتھ تبادلہ خیالات کرتے ہوئے کیا۔ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ جموں وکشمیر کے عوام کو اس وقت ایسے مصائب ، مشکلات اور چیلنجوں کا سامنا ہے ، جس کی مثال ماضی میں کہیں نہیں ملتی۔انہوں نے کہاکہ موجودہ صورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے ہر ایک کی یہی کوشش ہونی چاہئے کہ کس طرح سے اس مظلوم اور محکوم قوم کو موجودہ دلدل سے نکالا جاسکے اور اس کیلئے ذاتی مفادات اور سیاسی نظریات کو بالائے طاق رکھ کر ایک متحدہ آئینی، جمہوری اور سیاسی جدوجہد کی ضرورت ہے۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ یہاں مسلسل بے چینی سے کاروبار، تجارت، تعلیم، روزگار ، عام زندگی یہاں تک کہ سرکاری مشینری سمیت ہر ایک شعبہ غیر یقینی کی صورتحال کی نذر ہوگیا ہے اور عوام کو دور دور تک روشنی کی کرن نظر نہیں آرہی ہے۔انہوں نے کہا کہ نیشنل کانفرنس اپنے ایجنڈا اور پالیسی پر چٹان کی طرح قائم و دائم ہے۔ نئی دلی کو جموں و کشمیر میں امن و امان کی فضا قائم کرنے کیلئے یہاں کے عوام کے آئینی اور جمہوری حقوق بحال کرنے چاہئیں اور اس عمل میں جتنی دیر لگائی جائے گی حالات اْتنے ہی پیچیدہ ہوتے جائیں گے۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ اتحاد و اتفاق میں قائم رکھیں کیونکہ اسی میں ہماری کامیابی اور کامرانی کا راز مضمر ہے۔ نااتفاقی اور اتحاد کا فقدان بڑی بڑی قوموں کے زوال کا سبب بنا ہے۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ جموں وکشمیر کیخلاف اس وقت جو پہاڑی جیسی سازشیں رچائی جارہی ہیں اور لوگوں کا ایمان خریدنے کیلئے جس پیمانے پر زرکثیر خرچ کیا جارہاہے ۔ اس صورتحال میں ہمیں پرعزم، ثابت قدم رہ کر قوم اور وطن پرستی کا مظاہرہ کرکے مل جل کا چیلنجوں کا مقابلہ کرنا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper