Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ریاست

اتحادی جماعتیں بی جے پی سے خوش نہیں اگلے لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی کیخلاف ایک مضبوط آپشن ہوگا: اکھلیش

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 18th Aug

لکھنؤ، 18اگست : سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے صدر اکھلیش یادو نے بہار میں سیاسی تبدیلی کو مثبت اشارہ قرار دیا ہے اور امید ظاہر کی ہے کہ بی جے پی کا جادو2024 کے لوک سبھا انتخابات میں نہیں چل سکے گا ۔انہوں نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ اتر پردیش میں بی جے پی کے اتحادی ان سے خوش نہیں ہیں اور مستقبل میں حکمران جماعت سے تعلقات توڑ دیں گے۔ ایک انٹرویو میں کہا کہ وزیر اعلیٰ نتیش کمار کی قیادت میںاین ڈی اے سے تعلقات توڑنے کے بعدآر جے ڈی کانگریس کے ساتھ عظیم اتحاد کی حکومت اور بہار میں بہت سی دوسری پارٹیاںایک مثبت علامت ہیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ اگلے لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی کے خلاف ایک مضبوط متبادل تیار ہوگا۔انہوں نے اتر پردیش میں گزشتہ اسمبلی انتخابات اور رام پور اور اعظم گڑھ لوک سبھا سیٹ کے ضمنی انتخابات میں ایس پی کی شکست کے لیے الیکشن کمیشن کی ’بے ایمانی‘ کو ذمہ دار ٹھہرایا اور کہا کہ اگر کمیشن ایمانداری سے کام کرتا تویقینی طور پر نتائج مختلف ہوتے۔ایس پی صدر نے کہا کہ ان کی پارٹی نے ریاست کے آخری اسمبلی انتخابات جمہوریت کو بچانے کی اپیل کے ساتھ لڑے تھے، لیکن نتیجہ سب کے سامنے ہے۔ ملک میں اب کوئی بھی حق بجانب ادارہ نہیں بچا۔ یادو نے الزام لگایا کہ الیکشن کمیشن نے بے ایمانی کی ہے۔ ووٹرز کی بڑی تعداد کے نام ووٹر لسٹوں سے نکال دیئے گئے۔ رام پورلوک سبھا ضمنی انتخاب میں ایس پی کارکنوں کو ووٹ ڈالنے کی اجازت نہیں دی گئی، جبکہ اعظم گڑھ میں ایس پی کارکنوں کو ریڈ کارڈ جاری کیے گئے۔ کیا الیکشن کمیشن سو رہا تھا؟ اس نے ہماری شکایات پر توجہ نہیں دی۔ ایس پی صدر نے کہا کہ ان کی پوری توجہ پارٹی کو مضبوط بنانے پر ہے اور اس سال پارٹی کا قومی کنونشن منعقد کیا جائے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پارٹی کی رکنیت سازی مہم جاری ہے اور اسے اچھا رسپانس مل رہا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper