بہار

بہار میں سیاسی ہلچل تیز جے ڈ ی یو نے آر سی پی سنگھ سے طلب کیا کروڑوں کی ملکیت کا حساب

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 6th Aug

پٹنہ: 6اگست۔بہار میں برسراقتدار جے ڈی یو نے پارٹی کے سابق قومی صدر اور مرکزی حکومت میں وزیر آر سی پی سنگھ کو وجہ بتاؤ نوٹس جار کر دیا ہے۔ جے ڈی یو نے اپنے سابق قومی صدر پر پارٹی میں رہتے ہوئے اثاثے بنانے کا الزام عائد کیا ہے۔پارٹی کے ریاستی صدر امیش سنگھ کشواہا کی جانب سے ارسال کردہ خط میں کہا گیا ہے کہ ’’نالندہ ضلع جنتا دل (یو) کے دو ساتھیوں کی جانب سےشواہد اورثبوت کے ساتھ شکایت موصول ہوئی ہے۔ جس میں یہ بتایا گیا ہے کہ آپ کی اور آپ کے خاندان کے نام پر سال 2013 سے 2022 تک بہت سی غیر منقولہ جائیدادیں رجسٹرڈ ہوئی ہیں، جن میں کئی قسم کی بے ضابطگیاں نظر آتی ہیں۔‘‘خط میں مزید کہا گیا ’’آپ مدت طویل سے پارٹی کے معروف لیڈر نتیش کمار کے ساتھ عہدیدار اور سیاسی کارکن کے طور پر کام کرتے رہے ہیں۔ آپ کو انہوں نے دو مرتبہ راجیہ سبھا کا رکن، پارٹی کا قومی جنرل سیکریٹری (تنظیم) قومی صدر اور مرکز کے وزیر کے طور پر کام کرنے کا موقع فراہم کیا۔ آپ اس حقیقت سے واقف ہیں کہ ہمارے لیڈر بدعنوانی پر زیرو ٹالرینس پر کام کرتے رہے ہیں اور لمبے وقت سے عوامی زندگی گزارنے کے باوجود ان کے دامن پر کوئی داغ نہیں ہے اور نہ ہی انہوں نے کوئی دولت بنائی ہے۔ پارٹی آپ سے توقع کرتی ہے کہ آپ شکایت کے نکات پر اپنی واضح رائے کو فوری طور پر پارٹی تک پہنچائیں گے۔‘‘
خیال رہے کہ آر سی پی سنگھ پر نالندہ ضلع کے دو بلاکوں استھوان اور اسلام پور میں سال 2013-2022 کے دوران 40 بیگھہ زمین خریدنے کا الزام ہے۔ آر سی پی سنگھ پر زمین عطیہ میں لینے کا بھی الزام ہے۔ حالانکہ جے ڈی یو کی طرف سے بھیجے گئے نوٹس پر آر سی پی سی نے ابھی تک کوئی جواب نہیں دیا ہے لیکن پارٹی کی طرف سے کی گئی اس کارروائی کے بعد تصور کیا جا رہا ہے کہ جے ڈی یو آر سی پی سنگھ کے خلاف اس سے بھی بڑی کارروائی کر سکتی ہے۔
خط جاری ہونے کے بعد دونوں خیموں میں سیاسی ہلچل تیز ہوگئی ہے۔ آر سی پی سنگھ کے حامیوں نے اس کی مذمت کی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper