ملک بھر سے

ماں نے بچوں سمیت کنویں میں چھلانگ لگا ئی، چاروں بچے جاں بحق، ماں کوبچایاگیا

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 6th Aug

اجمیر، 6 اگست:۔ اجمیر ضلع کے گاوں گیگل پورہ (گولہ) میں ایک ماں نے خاندانی جھگڑے میں اپنے بچوں میں پیار بانٹنے کی جگہ موت بانٹ دی۔ اس نے اپنے ایک ماہ سے لے کر چار سال تک کے چار بچوں کو اپنے ہاتھوں سے کنویں میں پھینک دیا اور پھر خود بھی کنویں میں چھلانگ لگا دی۔ جمعہ کی دیر رات جب گھر والوں کو اس بات کا علم ہوا تو وہاں کہرام مچ گیا۔ پولیس اور سول ڈیفنس کی ٹیموں کو فوری طور پر موقع پر بلایا گیا۔ گاوں والوں نے بھی مدد کی اور کنویں سے ان پانچوں کی جان بچانے کی کوششیں شروع کر دیں لیکن، صرف ماں کو بچایا جا سکا۔ چاروں بچے ڈوبنے سے جاں بحق ہوگئے۔ تین بچوں کی لاشیں نکال لی گئیں جس کے بعد تین گھنٹے کی مسلسل تلاش کے بعد ایک ماہ کے بچے کی لاش بھی نکال لی گئی۔منگلیا واس تھانہ پولیس نے چاروں بچوں کی لاشیں پیسانگن اسپتال کے مردہ خانہ میں رکھوادیں۔ تھانہ انچارج سنیل تاڑا نے بتایا کہ جمعہ کی رات موتی دیوی بیوی بودو گرجر (32) کا خاندان میں جھگڑا ہوا اور اسی وجہ سے اس نے اپنے چار بچوں کے ساتھ بلدیو رام گرجر کے کنویں میں چھلانگ لگا دی۔ موتی دیوی کو زندہ نکال لیا گیا، لیکن کومل (4)، رنکو (3)، راجویر (2) اور دیوراج (1 ماہ) کو بچایا نہیں جاسکا۔ کچھ دیر بعد ان کی لاشیں نکال لی گئیں۔ دیوراج کی لاش کانٹوں میں اٹک گئی تھی ۔ اس کے لیے اجمیر سے ایس ڈی آر ایف کی ٹیم کو بلایا گیا اور کافی کوششوں کے بعد ہفتے کی صبح تقریباً 7 بجے اس کی لاش کو نکالا جا سکا۔ اب چاروں کی لاشوں کا پوسٹ مارٹم کیا جا رہا ہے۔وارڈ کے پنچ پرتاپ نے بتایا کہ بودو گرجر صرف کھیتی باڑی کا کام کرتے ہیں۔ ان چار بچوں کے علاوہ ایک بڑا بیٹا روی (7) ہے جو پسماندگان میں ہے۔ دوسری جانب اے ایس آئی ہوشیار سنگھ نے بتایا کہ شوہر بودو سنگھ نے بتایا کہ اس کی بیوی موتی ڈیلیوری کے بعد سے ہی ڈپریشن میں تھی۔ ذہنی تناؤ کی وجہ سے اس نے رات کو بچوں سمیت کنویں میں چھلانگ لگا دی۔ اس میں چاروں بچوں کی موت ہو گئی۔ ایس پی چونارام جاٹ اور اے ایس پی ویبھو شرما بھی موقع پر پہنچے اور واقعہ کے بارے میں دریافت کیا۔ اس کے بعد آئی جی روپیندر سنگھ بھی پیسانگن اسپتال پہنچے۔

About the author

Taasir Newspaper