Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ریاست

علی گڑھ ڈی ایم کی انسان دوستی کی سبھی کررہے ستائش

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 17th Nov.

علی گڑھ، 17 نومبر:کون کہتا ہے آسمان میں سوراخ نہیں ہو سکتا کم از کم دل سے پتھر تو اْچھالویارو، دشینت کمار کی یہ لائنیں علی گڑھ کے ڈی ایم اندرا وکرم سنگھ پر صادق آتی ہیں ویسے بے سہارا اور ضرورت مندوں کی مدد کرناان کا سہارا بننا نرم دل ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اندرا وکرم سنگھ کے لیے کوئی نئی بات نہیں ہے۔ لیکن جو شخص آپ کے ایک چھوٹے سے اقدام سے فیض یاب ہوا اسے تو ساری دنیا ہی مل گئی۔دراصل ہم بات کررہے ہیں علی گڑھ سیاہ خاص کے رہنے والے اوم ویر سنگھ کی، دو دن پہلے یہ شخص ضلع مجسٹریٹ اندرا وکرم سنگھ کے پاس آیا اور اپنی پریشانی کا اظہار کیا کہ اس بڑھاپے میں اس کا کوئی سہارا نہیں ہے۔ معاشی حالت بھی اچھی نہیں ہے۔ وہ اپنی آنکھوں سے دیکھنے کے قابل بھی نہیں ہے ا سلئے آنکھوں کا علاج چاہتا ہے جس سے وہ اپنی زندگی چلانے کے لیے مزدوری کر سکے۔ بس پھر کیا تھا، ڈی ایم اندرا وکرم سنگھ نے انسانی ہمدردی کا ثبوت دیتے ہوئے اوم ویر سنگھ کو اپنی گاڑی میں گاندھی آئی اسپتال بھیج دیا۔وہاں موجودانتظامی افسر مدھوپ لہری نے گاندھی آئی اسپتال کے ڈاکٹروں سے اوم ویر سنگھ کی آنکھوں کا معائنہ کرایا اور آپریشن بھی کروایا وہ بھی پوری طرح مفت۔آج اوم ویر سنگھ اپنی دونوں آنکھوں سے بالکل ٹھیک دیکھ سکتے ہیں اور ان کی آنکھیں ٹھیک ہو چکی ہیں۔ اوم ویر کا کہنا ہے کہ ضلع کلکٹر اندرا وکرم سنگھ انسانیت کے حقیقی علمبردار ہیں۔وہ ایسے ڈی ایم ہیں جوپوری ایمانداری کے ساتھ اپنی خدمات دے رہے ہیں اور دیگر اضلاع کے افسران کے لیے تحریک کا ذریعہ بنے ہوئے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اگر آپ سرکاری عہدے پر رہتے ہوئے عوامی خدمت کا کام کریں تو شہرت کے ساتھ ساتھ بے سہارا لوگوں کی مدد کر کے نیکی بھی کما سکتے ہیں۔ ڈی ایم کا کہنا ہے کہ صدقہ کے نقطہ نظر سے ہفتے میں کم از کم ایک کام کرنا چاہیے۔ڈاکٹر مدھوپ لہڑی نے بتایا کہ ڈی ایم ذاتی دلچسپی لے کر نہ صرف پریشان لوگوں کی مدد کرتے ہیں بلکہ فون پر بات کرکے بھیجے گئے مریض کی صحت کے بارے میں بھی معلومات حاصل کرتے ہیں۔ بہت سے علاج میں ہمیں باہر سے کچھ سامان اور دیگر ادویات منگوانی پڑتی ہیں، اس کے لیے وہ کہتے ہیں کہ اگر پیسے کی کمی ہو تو وہ ہم سے لے سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ضلع مجسٹریٹ جیسے افسر بہت کم ہیں جو جسم، دماغ اور جان سے مصیبت زدہ لوگوں کی مدد کرتے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ اوم ویر سنگھ کا علاج مفت اور بہتر کیا گیا ہے۔ اوم ویر کو اسپتال کھانا اور دوائیاں دے رہا ہے کیونکہ خاندان کا کوئی بھی فرد اس کی خیریت دریافت کرنے نہیں آیا۔

About the author

Taasir Newspaper