Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ریاست

اسپتال کے باہر آکسیجن سلنڈر پھٹ گیا، دھماکے کے خوف سے لوگ گھروں میں چھپ گئے، حادثے میں 2 کی موت

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 30th Dec.

چندولی،30دسمبر : اترپردیش کے چندولی ضلع میں ایک نجی اسپتال کے باہر آج زبردست سلنڈر پھٹنے سے دو لوگوں کی موت ہوگئی۔ دونوں کی لاشیں بری طرح مسخ ہوچکی ہیں۔ دھماکہ اتنا زوردار تھا کہ آس پاس کے لوگ گھروں میں چھپ گئے۔ دھماکے سے اسپتال اور قریبی گھروں کے شیشے ٹوٹ گئے۔ منظر عام پر آنے والی ویڈیو میں لوگ خوفزدہ ہیں اور آکسیجن سلنڈروں سے لدا ایک ٹرک بھی سڑک کے درمیان کھڑا نظر آرہا ہے۔ اطلاع ملتے ہی پولیس سپرنٹنڈنٹ، سی او اور مغل سرائے ایم ایل اے موقع پر پہنچ گئے۔ پولیس نے لاشوں کو تحویل میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لیے بھیج دیا اور آس پاس کی سی سی ٹی وی فوٹیج کی جانچ کی جارہی ہے۔معلومات کے مطابق دیال اسپتال مغل سرائے کوتوالی علاقے کے راوی نگر علاقے میں واقع ہے۔ یہاں صبح 9:30سے 9:00کے درمیان آکسیجن سلنڈر کی گاڑی آکسیجن سلنڈر پہنچانے آئی تھی۔ اس دوران آکسیجن سلنڈر اتارا جا رہا تھا کہ کسی وجہ سے آکسیجن سلنڈر پھٹ گیا۔ جس کی وجہ سے آکسیجن سلنڈر والی گاڑی پر موجود دو افراد اس کی لپیٹ میں آگئے۔مغل سرائے پولیس پنڈت دین دیال اپادھیائے نگر کے سی او انیرودھ سنگھ کے ساتھ موقع پر پہنچ گئی۔ موقع پر لوگوں کی بڑی بھیڑ جمع ہوگئی۔ فائر بریگیڈ کی ٹیم بھی موقع پر پہنچ گئی۔ پولیس سپرنٹنڈنٹ انکور اگروال نے جائے حادثہ کا معائنہ کیا اور فرانزک ٹیم کو بھی موقع پر بلایا گیا۔جاں بحق ہونے والوں کی شناخت ہوگئی ہے، دونوں افراد آکسیجن سلنڈر فراہم کرنے والی کمپنی میں کام کرتے تھے۔ واقعے کے وقت اسپتال کے باہر سے گزرنے والا ٹریکٹر ڈرائیور اینٹوں سے بھرا ٹریکٹر چھوڑ کر فرار ہوگیا۔ پولیس سپرنٹنڈنٹ انکور اگروال نے بتایا کہ معاملے میں آس پاس کے سی سی ٹی وی فوٹیج کی جانچ کی جا رہی ہے۔ یہ بھی چیک کیا جائے گا کہ آکسیجن سلنڈر کی ری فلنگ اور پیکنگ درست تھی یا نہیں۔ اس معاملے میں غفلت برتنے والوں کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔

About the author

Taasir Newspaper