Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ریاست

بی جے پی ایم ایل سی نول کشور یادو کا مطالبہ۔ شراب بندی میں خرچ کی گئی رقم کاجواب دے حکومت

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 16 th Dec.

پٹنہ، 16 دسمبر: بہار قانون سا زکونسل کے سرمائی اجلاس کا ا?ج کا چوتھا دن ہے۔ ا?ج بھی قانون ساز کونسل میں اپوزیشن ارکان کے ہنگامہ ا?رائی کے درمیان ایوان کی کارروائی جاری ہے۔ بی جے پی کے قانون ساز کونسل نول کشور یادو نے کہا ہے کہ ریاست میں شراب بندی قانون نافذ ہے اور حکومت نے شراب بندی قانون کے نام پر کروڑوں روپے خرچ کیے ہیں۔ شراب کی تحقیقات کے لیے حکومت نے ڈرون سے ہیلی کاپٹر تک اڑان بھری ہے۔ اس کے باوجود حکومت بندی پر عمل درا?مد کرنے میں ناکام رہی ہے۔ ریاستی حکومت نے امتناع کے نام پر کروڑوں روپے خرچ کئے ہیں۔ ریاست کی عظیم اتحاد حکومت کو ان تمام روپیوں کا حساب عوام کو دینا چاہئے۔ کیونکہ یہ اتنا پیسہ ریاست کے لوگوں کی محنت کی کمائی ہے۔ جسے شراب بندی کے لیے حکومت مسلسل اندھا دھند خرچ کرنے میں مصروف ہے۔
در اصل بی جے پی کے قانون ساز کونسل کے رکن نول کشور یادو نے بندی کے باوجود ریاست میں زہریلی شراب کی وجہ سے ہونے والی اموات پر حکومت سے سوال کیا۔ انہوں نے کہا کہ بندی مکمل ناکامی ہے۔ ریاست بھر میں لوگ زہریلی شراب پی کر دن بہ دن مر رہے ہیں۔ اس کے بعد بھی حکومت اپنی پیٹھ تھپ تھپا رہی ہے۔ حالانکہ ریاست کے لوگ دیکھ رہے ہیں کہ بہار میں شراب کی ہوم ڈیلیوری کس طرح کی جا رہی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اقتدار سے وابستہ لوگ مسلسل شراب کی اسمگلنگ میں مصروف ہیں۔
ایم ایل سی نول کشور یادو نے واضح طور پر کہا کہ حکومت زہریلی شراب سے مرنے تک جواب نہیں دے گی۔ تب تک بی جے پی بہار میں ایوان کی کارروائی نہیں چلنے دے گی۔ انہوں نے کہا کہ نتیش کمار امتناع کے نام پر اپنی پیٹھ تھپتھپا رہے ہیں، جب کہ سچ یہ ہے کہ اب ان کا اقبال پوری طرح ختم ہوچکا ہے۔ سرکاری افسران بھی ان کی بات نہیں سنتے۔ اس صورتحال کو دیکھتے ہوئے وزیر اعلیٰ نتیش کمار کو استعفیٰ دے دینا چاہئے۔ حکومت کی طرف سے شراب پابندی کے نام پر جو منافقت کی جا رہی ہے۔ اس کی وجہ سے بہت سے غریب خاندان کے لوگ مر رہے ہیں۔ جس طرح کے بیان حکومت کے لوگ زہریلی شراب سے مرنے کے بعد دے رہے ہیں۔ یہاں سے لگتا ہے کہ وہ بالکل غلط ہے۔ انہوں نے کہا کہ بہار میں شراب بندی کو صحیح طریقے سے نافذ کیا جانا چاہئے اور اب تک حکومت نے شراب بندی پر جتنی رقم خرچ کی ہے۔ اس کا جواب عوام کو دینا چاہیے۔

About the author

Taasir Newspaper