Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ریاست

دہلی میں ایک بار پھر ہوا ہوئی خراب، تعمیراتی کام پرروک

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 31st Dec.

نئی دہلی،31دسمبر:گزشتہ جمعرات کی شام سے تیزی سے بڑھتی ہوئی آلودگی اور محکمہ موسمیات کی پیشین گوئی کے پیش نظر CAQM نے جمعہ کو دہلی این سی آرمیں گریپ-3 نافذ کیا ہے۔ اس کے تحت اب دہلی-این سی آر میں نجی تعمیر ممکن نہیں ہوگی۔ اس کے ساتھ ہی این سی آر سے متعلق ریاستی حکومتوں کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ ڈیزل کی بی ایس-IV گاڑیوں اور پٹرول کی بی ایس-III گاڑیوں پر پابندی عائد کریں۔دارالحکومت میں گزشتہ سال کی طرح اگر یہ پابندی مشورے پر لگائی گئی تو نئے سال کا جشن منانے والے بہت سے لوگوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ انڈیکس نے آلودگی کی بڑھتی ہوئی سطح کے پیش نظر جمعہ کو ذیلی کمیٹی کا ہنگامی اجلاس منعقد کیا۔ اس میٹنگ میں محکمہ موسمیات نے پیشین گوئی کی بنیاد پر بتایا کہ جمعہ کو دارالحکومت میں آلودگی کی سطح 399 تھی۔ یہ گمبھیر سے صرف دو پوائنٹ نیچے ہے۔ موجودہ صورتحال میں آلودگی مزید بڑھنے کا خدشہ ہے۔ 31 دسمبر اور یکم جنوری 2023 کو اگلے دو دنوں تک یہ نازک سطح پر رہے گا۔اس پیشن گوئی کے بعد، ذیلی کمیٹی نے GRAP کے اسٹیج-3 کو نافذ کر دیا ہے۔ مرحلہ 3 شدت کی سطح کی پیش گوئی کی بنیاد پر لاگو کیا جاتا ہے۔ جب AQI 401 اور 450 کے درمیان ہوتا ہے تو اسے آلودگی کی شدید سطح سمجھا جاتا ہے۔ گریپ-3 کے تعلق سے تمام متعلقہ اضلاع اور ریاستوں کو ضروری ہدایات دی گئی ہیں۔ اس بار، GRAP کا مرحلہ-1 5 اکتوبر سے اور مرحلہ-2 19 اکتوبر سے دارالحکومت میں نافذ کیا گیا تھا۔ اس ماہ کے شروع میں 4 دسمبر کو آلودگی کے اچانک خطرناک سطح پر پہنچنے کے بعد اسے نافذ کیا گیا تھا۔ لیکن جب تک اسے نافذ کیا گیا، آلودگی کم ہونا شروع ہو چکی تھی۔ اس کے بعد 7 دسمبر کو GRAP کا اسٹیج تین واپس لے لیا گیا۔آنے والے دنوں میں لوگوں کو اس سال کی دوسری سموگ کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق یکم جنوری تک آلودگی تشویشناک حالت میں رہے گی۔ سموگ کی لپیٹ لوگوں کو مزید پریشان کرے گی۔ ہفتہ اور اتوار کو بھی شدید دھند چھائی رہے گی۔ ایسی صورتحال میں دارالحکومت پر سموگ کی ایک موٹی تہہ لٹک سکتی ہے۔اس موسم کی بات کریں تو اس بار سموگ کے معاملے میں لوگوں کو راحت ملی ہے۔ جب آلودگی مسلسل دو یا زیادہ دنوں تک شدید حالت میں رہتی ہے، تو اسے ’سموگ ایپیسوڈ‘ کہا جاتا ہے۔ اس بار ایسا نہیں ہوا۔ اس موسم سرما میں پہلی بار دارالحکومت میں آلودگی یکم نومبر کو خطرناک سطح پر پہنچ گئی۔ اس دن آلودگی کی سطح 424 تھی۔ اس کے بعد 3 اور 4 نومبر کو آلودگی خطرناک سطح پر رہی۔ مندرجہ بالا دونوں دنوں میں AQI 450 اور 447 تھا۔ اس کے بعد 4 دسمبر کو AQI 407، 19 دسمبر کو 410 تھا۔اب جمعہ کی شام اس کی سطح 400 تک پہنچ گئی۔ دارالحکومت کے کئی حصوں میں آلودگی شدید سطح پر رہی۔ دہلی کا نصف سے زیادہ حصہ اس وقت آلودگی کی شدید سطح میں سانس لے رہا ہے۔ علی پور اے کیو آئی 416، شادی پور 402، این ایس آئی ٹی دوارکا 424، آر کے پورم 416، پنجابی باغ 415، جواہر لعل نہرو اسٹیڈیم 418، نہرو نگر 431، سیکٹر-8 دوارکا 417، پتپڑگنج 418،جہانگیرپوری 419، روہنی 424، وویک وہار 412، نجف گڑھ 404، میجر دھیان چند اسٹیڈیم 422، نریلا 425، فیز 2 اوکھلا 408، وزیر پور 433، بوانا 430، پونا 430، منڈو 40،، مرڈو 40، سری 40۔آئی آئی ٹی ایم پونے کے مطابق، 31 دسمبر اور 1 جنوری 2023 کو آلودگی نازک سطح پر رہے گی۔ اس کے بعد 2 جنوری کو یہ بہت خراب سطح پر آسکتا ہے۔ اس کے بعد اگلے چھ دنوں تک آلودگی انتہائی خراب سطح پر رہے گی۔ جمعہ کو ہوا کی رفتار 8 سے 16 کلومیٹر فی گھنٹہ تھی۔ 31 دسمبر کو گھنی دھند ہوگی اور ہوا کی رفتار میں کوئی بہتری نہیں آئے گی۔ اس کے بعد یکم جنوری کو ہوا کی رفتار صرف 4 سے 6 کلومیٹر فی گھنٹہ رہ سکتی ہے۔ جس کی وجہ سے آلودگی میں معمولی اضافہ ہو سکتا ہے۔ سفری پیشین گوئی کے مطابق یکم جنوری کو ہوا کی رفتار بہت کمزور رہے گی۔ ایسے میں اگر سخت اقدامات نہ اٹھائے گئے تو آلودگی بہت پریشان کن ہو سکتی ہے۔

About the author

Taasir Newspaper