Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

فن فنکار

رجنی کانت ساؤتھ فلم انڈسٹری کے تھلائیوا ہیں

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 11 th Dec.

مشہور فلمی اداکار رجنی کانت، جو جنوبی فلم انڈسٹری میں ‘تھلائیوا’ کے نام سے مشہور ہیں، 12 دسمبر 1950 کو بنگلور میں پیدا ہوئے۔ رجنی کانت کا اصل نام شیواجی راؤ گائیکواڑ تھا۔ انہیں بچپن سے ہی اداکاری کا شوق تھا لیکن ان کی زندگی کافی جدوجہد سے گزری۔ خاندان کی خراب معاشی حالت کی وجہ سے اپنے کیرئیر کے آغاز میں انہوں نے قلی سے بس کنڈکٹر تک کا کام کیا۔
سال 1973 میں رجنی کانت نے اپنے شوق کو پورا کرنے کے مقصد سے مدراس فلم انسٹی ٹیوٹ سے اداکاری کا ڈپلومہ کیا۔ آہستہ آہستہ رجنی کانت نے کئی ڈراموں میں حصہ لینا شروع کر دیا۔ اس دوران فلم ڈائریکٹر کے. بالا چندر کی نظر اس پر پڑی اور وہ اس سے بہت متاثر ہوئے۔ کے بالاچندرا نے رجنی کانت کو 25 سال کی عمر میں پہلی بار تامل فلم ‘اپوروا راگنگل’ میں اداکاری کا موقع دیا۔ اس فلم میں وہ ایک چھوٹے سے کردار میں تھے لیکن انہوں نے اپنی شاندار اداکاری سے سب کی توجہ حاصل کرلی۔ابتدائی مرحلے میں رجنی کانت زیادہ تر فلموں میں ولن کا کردار ادا کرتے نظر آئے۔ سال 1977 میں انہیں تیلگو فلم ‘چلاکما چیپینادی’ میں پہلی بار مرکزی اداکار کے طور پر کام کرنے کا موقع ملا۔ اس کے بعد رجنی کانت نے ساؤتھ کی کئی فلموں میں کام کیا۔ فلموں میں اپنے الگ انداز اور کردار سے رجنی کانت نے سب کو اپنا دیوانہ بنا لیا۔ سال 1980 میں فلم ‘بلا’ ان کی پہلی تجارتی طور پر کامیاب فلم تھی۔رجنی کانت کی پہلی بالی ووڈ فلم ‘اندھا قانون’ سال 1983 میں ریلیز ہوئی تھی۔ اس فلم میں ان کے ساتھ ہیما مالنی اور امیتابھ بچن تھے۔ اس کے بعد انہوں نے تامل، تیلگو اور ہندی کے ساتھ ساتھ کنڑ، ملیالم، بنگالی اور انگریزی فلموں میں کام کیا، جن میں موندرو موڈیچو، گایتری، میری عدالت، گنگوا، جان جانے جناردھن، ہم، چالباز، بلندی، پھول بنے انگارے، اندران ، شیواجی دی باس، 2.0، روبوٹ، پیٹا وغیرہ شامل ہیں۔۔رجنی کانت نے 1981 میں لتھا رنگاچاری سے شادی کی۔ ان کی دو بیٹیاں ہیں۔ ساؤتھ میں ان کے پرستار انہیں دیوتا کی طرح پوجتے ہیں اور انہیں ‘تھلائیوا’ کہہ کر مخاطب کرتے ہیں۔ حکومت ہند نے انہیں 2000 میں پدم بھوشن اور 2016 میں پدم وبھوشن سے ان کی فلموں میں غیرمعمولی شراکت کے لیے اعزاز سے نوازا۔رجنی کانت سوشل میڈیا پر بھی کافی متحرک ہیں۔ ملک اور بیرون ملک ان کے چاہنے والوں کی تعداد لاکھوں میں ہے۔ سگریٹ کو ہوا میں اڑا کر پینے کا ان کا انداز آج بھی بہت پسند کیا جاتا ہے۔ رجنی کانت اب بھی فلمی دنیا میں سرگرم ہیں۔ آج بھی ان کی شاندار اداکاری مداحوں میں زندہ ہے۔ رجنی کانت جلد ہی فلم جیلر میں نظر آئیں گے۔

About the author

Taasir Newspaper