Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

دنیا بھر سے

سعودی عرب اور جارجیا کامعیشت اور توانائی کے شعبے میں تعاون بڑھانے پراتفاق

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 24 th Dec.

ریاض،23دسمبر: سعودی عرب اورجارجیا نے معیشت، سرمایہ کاری ، توانائی اور سلامتی سے متعلق متعدد شعبوں میں دوطرفہ تعاون بڑھانے سے اتفاق کیا ہے۔جارجیا کے وزیراعظم ارکلی گریباشویلی کے دورہ الریاض کے اختتام پرجاری کردہ ایک بیان کے مطابق انھوں نے میزبان سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کے ساتھ دوطرفہ تعلقات اورباہمی دلچسپی کے اہم علاقائی اورعالمی امورپرتبادلہ خیال کیا ہے۔اس کے علاوہ انھوں نے دونوں اطراف کے سینیر عہدیداروں کے وفود کی موجودگی میں باضابطہ بات چیت کی ہے۔اس موقع پرجارجیا کے وزیراعظم نے کہا کہ ان کا ملک 2030 ورلڈ ایکسپوکی میزبانی کے لیے مملکت کی بولی کی حمایت کرتا ہے ، اورعالمی میلے کی میزبانی کرنے کی مملکت کی صلاحیت پر اعتماد کا اظہارکرتا ہے۔سعودی عرب کی سرکاری پریس ایجنسی (ایس پی اے) کی جانب سے جاری ایک مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ولی عہدشہزادہ محمد بن سلمان مہمان وزیراعظم کے ان جذبات کو سراہا۔طرفین نے معیشت اورسرمایہ کاری کے شعبوں سے متعلق امورپرتبادلہ خیال میں دونوں ممالک کے درمیان تجارت کو مضبوط بنانے اور باہمی اور مشترکہ سرمایہ کاری کی سطح کو بڑھانے کی اہمیت پر زوردیا۔انھوں نے مملکت کے ویڑن 2030 کے ذریعے پیش کردہ سرمایہ کاری کے مواقع اور قابل تجدید توانائی ، زراعت ، پیداوار اور سیاحت جیسے مختلف امیدافزاشعبوں میں جارجیا کی ترقیاتی ترجیحات سے فائدہ اٹھانے پر بھی اتفاق کیا۔بیان میں کہا گیا ہے کہ مذاکرات میں طرفین نے دونوں ممالک کے درمیان اقتصادی تعاون میں نجی شعبے کے اہم کردار کی تعریف کی اورنجی شعبے کے لیے سرمایہ کاری کے مناسب حالات پیدا کرنے کی اہمیت پر اتفاق کیا۔سعودی عرب اور جارجیا نے باہمی دوروں میں اضافے اوروقتاً فوقتاً سرمایہ کاری اور کاروباری فورمز کے انعقاد پر بھی اتفاق کیا۔انھوں نے دونوں اطراف کے کاروباری افراد پرزور دیا کہ وہ دونوں ممالک میں دستیاب سرمایہ کاری کے مواقع سے فائدہ اٹھائیں اور اس کے نتیجے میں انھیں ٹھوس شراکت داری میں تبدیل کریں۔دونوں رہنماؤں نے مشترکہ سعودی جارجیائی بزنس کونسل کے قیام پر بھی اتفاق کیا۔طرفین نے قابل تجدیدتوانائی کے شعبے، ہائیڈرو کاربن وسائل کے جدید استعمال اور توانائی کی کارکردگی سمیت مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعاون کو مضبوط بنانے کے ارادے کا اظہارکیا ہے۔جارجیا نے موسمیاتی تبدیلی کے اثرات کو کم کرنے میں سعودی عرب کی کوششوں کا خیرمقدم کیا اور مملکت کے سعودی سبزاقدام (ایس جی آئی) اور مشرقِ اوسط سبز اقدام کے لیے حمایت کی پیش کش کی۔طرفین نے تیل کی عالمی منڈی میں استحکام کی اہمیت پر اتفاق کیا اورجارجیائی فریق نے مارکیٹ کے توازن کو برقرار رکھنے میں مملکت کی کوششوں کا خیرمقدم کیا۔سعودی اور جارجیائی حکام نے مہارت اور تربیت کے تبادلے سمیت ہر قسم کے جرائم سے نمٹنے کے لیے دوطرفہ تعاون اور ہم آہنگی کو بڑھانے میں بھی دل چسپی کا اظہار کیا۔انھوں نے بین الاقوامی استحکام اور امن کو برقرار رکھنے کے لیے مزید کوششیں کرنے پر بھی اتفاق کیا اوربین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) اور ورلڈ بینک جیسے عالمی فورموں میں حمایت اور ہم آہنگی برقرار رکھنے پر اتفاق کیا۔انھوں نے علاقائی اور بین الاقوامی امور کے بارے میں بھی تبادلہ خیال کیا اور یمن اور یوکرین کی تازہ صورت حال پر بات چیت کی۔انھوں نے یمنی بحران کے جامع سیاسی حل تک پہنچنے کے لیے اقوام متحدہ کی کوششوں کی مکمل حمایت کا اعادہ کیا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ جارجیائی فریق نے یمن میں جنگ کے خاتمے کے لیے سعودی عرب کے اقدامات کے ساتھ ساتھ یمنی فریقوں کے درمیان بات چیت کی حوصلہ افزائی کے مقصد سے اس کی کوششوں کی تعریف کی۔فریقین نے یمنی صدارتی قیادت کونسل کی حمایت کی اہمیت پربھی زور دیا تاکہ وہ اپنے فرائض کی انجام دہی،خلیجی اقدام اور اس کے نفاذ کے طریق کار، یمنی قومی مکالمے کے نتائج اور سلامتی کونسل کی قرارداد نمبر 2216 کے مطابق یمنی بحران کے سیاسی حل تک پہنچ سکے۔طرفین نے یوکرین کے تنازع کو پْرامن طریقوں سے حل کرنے کی اہمیت پرروشنی ڈالی اور کشیدگی میں کمی لانے کے لیے ہرممکن کوشش کی جس سے سلامتی اور استحکام کی بحالی میں مدد ملے۔بیان میں کہاگیا ہے کہ جارجیائی فریق نے سعودی ولی عہد کی جانب سے یوکرین کو انسانی بنیادوں پر امدادمہیا کرنے اور اس سلسلے میں مسلسل کوششوں کے علاوہ مختلف قومیتوں کے متعدد جنگی قیدیوں کو رہا کرانے میں کی جانے والی انسانی اور سیاسی کوششوں کی تعریف کی۔مہمان وفد کا کہنا تھا کہ سعودی امداد یوکرین کے عوام کی تکالیف کو کم کرنے میں معاون ثابت ہوگی۔مذاکرات میں سعودی اور جارجیائی وفود نے صنعت اور کان کنی کے شعبوں میں تعاون کو اس اندازمیں مضبوط بنانے پر اتفاق کیا جس سے ان دونوں کے مفادات کو فائدہ پہنچے۔انھوں نے زراعت، ٹرانسپورٹ، شہری ہوابازی، سیاحت، ٹیکنالوجی، صحت اور تعلیم کے شعبوں میں دوطرفہ تعاون کو فروغ دینے پربھی اتفاق کیا۔

About the author

Taasir Newspaper