Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

اداریہ

فیفا ورلڈ کپ: میسّی پر پوری دنیا کی نظر

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 17 th Dec.

فیفا ورلڈ کپ 2022 کا فائنل میچ آج اتوار (18 دسمبر) کو رات 8.30 بجے کھیلا جائے گا۔اس بڑے مقابلے میں ارجنٹائن اور فرانس آمنے سامنے ہوں گے۔اس میچ پر پوری دنیا کی نظر ہوگی ۔ فیفا ورلڈ کپ میں یورپی اور لاطینی امریکی ممالک کے درمیان بالادستی کی جنگ دیکھنے کو ملتی رہی ہے۔ برازیل جب چیمپئن بنا تب سے ، یعنی 2002 سے ورلڈ کپ میں یورپی ٹیموں کا غلبہ ہے۔ اس تسلسل کو توڑنے کے لئے اس بارلیونل آندریس میسّی کی قیادت میں ارجنٹائن کی ٹیم فائنل مقابلہ کے لئے میدان میں اترے گی ۔ ارجنٹائن کا مقابلہ فرانس سے ہوگا، جس نے چار سال قبل یعنی 2018 میں ورلڈ چمپئن شپ کا خطاب جیتا تھا۔ آج کھیلے جانے والے فائنل میچ میں جو بھی ٹیم جیتے گی، اس کے نام واقعی ڈھیروںر یکارڈ ہوں گے ۔ اور اگر فرانس مسلسل دوسری بار خطاب جیتنے میں کامیاب ہو جاتا ہے تو وہ 60 سال قبل برازیل کے کرشمے کو دہرانے والا پہلا ملک ہو جائے گا۔ واضح ہو کہ برازیل نے 1958 اور 1962 میں لگاتار دو بار چمپئن شپ کاخطاب جیتا تھا۔
فٹ بال کھیل میں دلچسپی رکھنے والوں کو معلوم ہے کہ یہ چیمپئن شپ لیونل میسّی کے لیے بھی خاص معنی رکھتی ہے۔ دنیا کے بہترین کھلاڑیوں میں سے ایک میسی نے فٹ بال میں تقریباً ہر کامیابی حاصل کی ہے۔ وہ دو مرتبہ ورلڈ کپ کے بہترین کھلاڑی بن چکے ہیں۔ وہ سات بار بیلن ڈی اور خطاب جیت چکے ہیں۔ میسی ایک بار کوپا امریکہ اور چار بار چیمپئنز لیگ کا خطاب بھی جیت چکے ہیں۔ لیکن سب سے پر وقار فیفا ورلڈ کپ خطاب اب بھی ان سے دور ہے۔ حالانکہ میسی کا کہنا ہےکہ یہ ان کا آخری ورلڈ کپ ہے۔ایسے میں اگر وہ فرانس کو شکست دےکر کے خطاب جیتنے کا خواب پورا کرنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں تو ان کا نام یقیناََعظیم فٹ بالرز میراڈونا اور پیلے کے برابر ہو جائے گا۔
اگرچہ میسّی کی قیادت میں ارجنٹائن نے 2014 میں فائنل تک چیلنج پیش کیا تھا لیکن اس وقت جرمنی نے میسی کا خواب چکنا چور کردیا تھا۔ اس بار میسی کی ٹیم جس طرح سے کھیل رہی ہے، اس سے لگتا ہے کہ وہ اس بار خطاب جیتنے کے پختہ ارادے کے ساتھ میدان میں اتری ہے۔ کروشیا کے خلاف سیمی فائنل کی جیت میں میسّی نے جس طرح دوسرا گول کرنے کا راستہ تیار کیا تھا، اسے آنے والے برسوں تک فراموش نہیں کیا جا سکے گا۔ یہ اس کی ڈرائبلنگ کی مہارت تھی کہ ڈیفنڈر کے ساتھ ساتھ رہنےکے باوجود الواریز کو دیا جانے والا ، میسّی کا پاس اتنا درست تھا کہ ڈیفنس اسے گیند کو گول میں ڈالنے سے نہیں روک سکا۔ اسی طرح پنالٹی گول پر میسّی کا شاٹ اتنا بہترین تھا کہ گول کیپر کے لیے گیند تک پہنچنا ممکن نہ تھا۔
ارجنٹائن اور فرانس کی ٹیموں کی کار کردگی پر نظر ڈالی جاتی ہے تو ارجنٹائن کا ہی پلڑا بھاری دکھائی دیتا ہے، لیکن موجودہ ورلڈ کپ اتنے سارے اپس اینڈ ڈاؤنس رہے ہیں کہ بیشتر فٹبال کھیل کے ماہرین کا ماننا ہے کہ فائنل مقابلہ بہت ہی ڈرامائی ہو سکتا ہے۔ارجنٹائن اور فرانس اس سے قبل آفیشیل میچوں میں 12 بار آمنے سامنے آ چکے ہیں۔ ان میں ارجنٹائن نے چھ میں فتح حاصل کی ہے اور تین میں شکست کھانی پڑی ہے۔دونوں ٹیموں کے درمیان آخری مقابلہ روس میں منعقد فیفا ورلڈ کپ 2018 کے پری کوارٹر فائنل میں ہوا تھا ،جس میں فرانس نے 4-3 سے کامیابی حاصل کی تھی۔دونوں ٹیموں کے درمیان پہلا مقابلہ 15 جولائی، 1930 کو فیفا ورلڈ کپ میں ہوا تھا،جس میں ارجنٹائن نے ایک گول سے کامیابی حاصل کی تھی۔اس کے بعد ارجنٹائن نے 1971، 1974، 1978 ورلڈ کپ، 2007 اور 2009 میں فرانس کے خلاف میچز جیتے جبکہ فرانس نے 8 جنوری 1971 اور 26 مارچ 1986 کو ارجنٹائن کو شکست دی تھی۔اس کے علاوہ 1965، 1972 اور 1977 میں دونوں ٹیمیں ایک دوسرے کے خلاف گول کرنے میں ناکام رہیں تھیں۔
اسلامی ملک قطر کی راجدھانی دوحہ میں کھیلے جانے والے فیفا ورلڈ کپ کا فاتح کون بنتا ہے یہ تو آج ہی رات میں معلوم ہو جائے گا لیکن بھارت کے کھیل شائقین چاہتے ہیںجیت کا سہرہ ارجنٹائن کے کیپٹن لیونل آندریس میسّی کے ہی سر بندھے۔ان دنوں میسّی کی پوری دنیا دیوانی ہے۔ یہ وہی میسّی ہیں، جنھوں نے ورلڈ کپ میچ کے دوران پاس کی مسجد میں جاکرنماز جمعہ کی ادائیگی کے طریقے کو قریب سے دیکھا اور اپنے موبائل میں رکارڈ کیا تھا ساتھ ہی نماز جمعہ ہفتہ میں صرف ایک ہی دن کیوں ادا کی جاتی ہے ؟ اس طرح کےچند اور مثبت سوالات کے اطمینان بخش جواب سن کر کہا تھا کہ اسلام قابل احترام مذہب ہے ۔ میسّی کے اس ایکشن کا چرچا شوسل میڈیا کے مختلف پلیٹ فارمز پر بڑی تیزی سے گشت کر رہا ہے۔
*************************

About the author

Taasir Newspaper