Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

اداریہ

قومی پرچم کا احترام ضروری

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 7 th Dec.

ترنگا جھنڈا بھارت کا قومی پرچم ہے۔ یہ ہماری شان ہے، ہمارا فخر ہے۔ اس کے وقار کے تحفظ کے لیے ہمارے بہادر فوجی اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرتے ہیں۔ 26 جنوری اور 15 اگست کو لوگ اسے اپنے گھروں، کاروں اور سائیکلوں میں لگا کر گھومتے ہیں۔ اس میں عوام کی حب الوطنی کا جذبہ مضمر ہوتا ہے۔ لیکن ترنگا جھنڈا لہرانے کے کئی اصول ہیں۔ان اصول و ضوابط کا پاس و لحاظ رکھے بغیر اسے کہیں بھی نہیں لگایا جا سکتا ہے۔ ا صول و ضوابط کو نظر انداز کرکے قومی پرچم کو کہیں لگانافلیگ کوڈ آف انڈیا کی خلاف ورزی ہوگا ۔
گزشتہ روز ہریانہ کےگروگرام کے ڈی ایل ایف فیز 3 میں قومی پرچم کے اصول کو توڑنے کی وجہ سے پولیس نے ایک کار ڈرائیور کے خلاف کارروائی کی ہے۔ غلطی صرف یہ تھی کہ کار مالک نے اپنی کار کے بونٹ پر ترنگا جھنڈا لگا دیا تھا۔ بس اسی کوتاہی کی وجہ سے پولیس نے کار کے ڈرائیور کے خلاف کارروائی کی ہے۔واقعہ یہ ہے کہ ہریانہ کے گروگرام پولس نے ڈی ایل ایف فیز 3، میں ایک کار کے ڈرائیور کے خلاف بونٹ پر ترنگا جھنڈا لہرانے پر کارروائی کی ہے۔ پولیس نے گاڑی کو روکا تو ڈرائیور نے بتایا کہ اس کے مالک نے یہ جھنڈا لگوایا ہے، جب کہ اس کے پاس اس سلسلے میں کوئی اجازت نہیں ہے۔ پولیس نے کیس درج کرکے معاملے کی تحقیقات شروع کردی ہے۔
اگر آپ بھی اپنے قومی پرچم کو کہیں لگانے کا ارادہ رکھتے ہیں اس کے اصول و ضوابط کے معاملے میں ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے۔ملک کے تمام باشعور شہریوں کو اپنے قومی پرچم سے متعلق اصولوں سے باخبر رہنا چاہئے۔یعنی ہم سب کو یہ جاننا چاہئے کہ گاڑیوں میں ترنگا جھنڈا لہرانے کا کیا حکم ہے۔ قومی پرچم سے متعلق اصولوں کے سلسلے میں تفصیلی معلومات وزارت داخلہ کی ویب سائٹ پر دی گئی ہیں اور قومی پرچم لہرانے کے لیے انڈین فلیگ کوڈ 2002 بنایا گیا ہے۔ اس میں پرچم کشائی کے حوالے سے کئی اصول بنائے گئے ہیں اور بتایا گیا ہے کہ قومی پرچم کا استعمال کیسے کیا جائے۔ اس فلیگ کوڈ میں کچھ لوگوں کو اپنی گاڑیوں میں جھنڈا لہرانے کے خصوصی اختیارات دیے گئے ہیں۔ صدر جمہوریہ، نائب صدر جمہوریہ، گورنر اور نائب گورنر، وزیر اعظم اور کابینہ کے دیگر وزرا، لوک سبھا کے اسپیکر، راجیہ سبھا اور لوک سبھا کے ڈپٹی اسپیکر، بیرون ملک بھارت مشن کے عہدوں کے صدور، قانون ساز اسمبلیوں کے اسپیکر، چیف جسٹس آف انڈیا اور ہائی کورٹ عدالت کے جج کی گاڑیوںپر ہیں ترنگا لہرایا جا سکتا ہے۔قومی پرچم کو اس جہاز پر بھی لگایا جاتا ہے ،جس سے صدر یا نائب صدر کو دوسرے ملک لے جانا ہوتا ہے۔ قومی پرچم کے ساتھ، جس ملک کا دورہ ہو وہاں کا جھنڈا بھی لگایا جاتا ہے،اگر راستے میں کسی ملک میں جہاز کا پڑاو ہو تو اس صورت میں وہاں ٹھہرنے کے عرصے تک متعلقہ ملک کا جھنڈا بھی لگایا جاتا ہے۔ جب صدر کا پڑاؤ بھارت میں ہی ہو تو پرچم کو جہاز کے اس مقام پر جہاں سے صدر نکلتے ہیں یا داخل ہوتے ہیں پر لگایا جاتا ہے ؛اسی طرح پرچم کو ریل گاڑی پر بھی لگایا جاتا ہے لیکن صرف اس صورت میں جب ٹرین کھڑی ہو یا اسٹیشن پر پہنچ چکی ہو۔
واضح ہو کہ ترنگے کی توہین کرنے پر ملک کے قانون میں سزا کا بھی انتظام ہے۔ نیشنل آنر ایکٹ 1971 کی توہین کی روک تھام کے سیکشن 2 کے تحت ترنگے کے جھنڈے کی توہین کرنے پر 3 سال تک قید یا جرمانہ ہو سکتا ہے۔ ایک اور بات کہ جب کوئی غیر ملکی مہمان کو حکومت کی طرف سےگاڑی کی سہولت فراہم کرائی جاتی ہے تو گاڑی کے دائیں جانب قومی پرچم جبکہ گاڑی کے بائیں جانب ، جس ملک کے مہمان ہوتے ہیں،اس ملک کا جھنڈا لگانا ہوتا ہے۔
جب بھارتی پرچم کو دیگر کئی غیر ملکی پرچموں کے ساتھ بھارت میں لگایا جائے تو اسے سب کے شروع میں لگایا جائے۔ جب سیدھے قطار میں جھنڈے ہوں تو بھارتی پرچم کو دائیں جانب (ناظر کے بائیں جانب) لگایا جائے جبکہ دیگر جھنڈوں کو ممالک کے نام کے حروف تہجی کی ترتیب میں رکھا جائے۔ اس موقع پر دیگر تمام جھنڈوں کے سائز برابر ہونے چاہیے جبکہ کوئی بھی پرچم کا سائز بھارتی پرچم سے بڑا نہیں ہونا چاہیے۔اس طرح قومی پرچم کو آویزاں کرنے کے اور بھی کئی اصول ہیں۔ملک کے تمام شہریوں کی یہ ذمہ داری ہے کہ ان اصولوں کو باریکی سے سمجھیں۔بصورت دیگر ترنگے کی توہین کے ارتکاب کا اندیشہ ہمیشہ بنا رہے گا۔
****************

 

About the author

Taasir Newspaper