Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ریاست

مدرسہ کے بچوں کی پٹائی کرنے کے الزام میں گرفتار معلم کی ضمانت منظور

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 15 th Dec.

15/ دسمبر
مدرسہ کے بچوں کی مبینہ پٹائی کرنے کے الزام میں گرفتار حافظ محمد ابراہیم محمد مستقیم کی ضمانت تھانے سیشن عدالت نے منظور کرلی ہے اور ملزم کو پچیس ہزار روپئے کے ذاتی مچلکہ پر رہا کیئے جانے کا حکم جاری کیا۔
حافظ ابراہیم پر الزام ہے کہ انہوں نے مدرسے میں زیر تعلیم پانچ بچوں کی پٹائی کی تھی جس کے بعد بچے مدرسہ سے فرار ہوگئے تھے، مدرسے کے بچوں کو ڈمبیولی جی آر پی نے اپنی تحویل میں لیکر چلڈرن ہوم میں بھیج دیا تھا جبکہ حافظ ابراہیم کو گرفتار کرلیا گیا تھا۔
7/ جولائی کو لوکل ٹرین میں کرتا پائجامہ اور ٹوپی پہنے ہوئے بچوں کو بغیر کسی سرپرست کے پریشان دیکھنے کے بعد ریلوے پولس نے بچوں سے تفتیش کی جس کے بعد پتہ چلا کہ بچے کلوا کے ایک مدرسہ سے بھاگ کر جارہے ہیں کیونکہ انہیں مبینہ طور پر ان کے استاد نے زدوکوب کیا ہے۔
ریلوے پولس کی شکایت پر مدرسہ کے دو معلمین کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا تھا جس کے بعد حافظ ابراہیم کی گرفتاری عمل میں آئی تھی جبکہ دوسرے معلم محمد ابراہیم کی ضمانت قبل از گرفتاری عدالت نے منظور کی تھی۔
حافظ ابراہیم کی گرفتاری کے بعد مدرسہ کے منتظمین نے جمعیۃ علماء مہاراشٹر (ارشد مدنی) کے جنرل سیکریٹری مولانا حلیم اللہ قاسمی سے گذارش کی کہ حافظ ابراہیم کی رہائی کے لیئے انہیں تعاون کریں، معاملے کی نوعیت سمجھنے کے بعد جمعیۃ علماء مہاراشٹر قانونی امداد کمیٹی کے سربراہ گلزار اعظمی کی ہدایت پر حافظ ابراہیم کی ضمانت پر رہائی کے لیئے کوشش کی گئی جس کے نتیجہ میں تھانے عدالت نے حافظ ابراہیم کو ضمانت پر رہا کیئے جانے کا حکم جاری کیا۔
جمعیۃ علماء قانونی امداد کمیٹی کی جانب سے ایڈوکیٹ ندیم شیخ نے حافظ ابراہیم کی پیروی کی اور عدالت کو بتایا کہ معلمین نے بچوں کو زدو کوب نہیں کیا تھا بلکہ سبق یاد نہ کرنے اور مدرسہ میں مستی کرنے کی وجہ سے معلمین نے انہیں ڈانٹا تھا جس کے بعد پانچوں بچے معلمین کی اجازت کے بغیر مدرسہ سے فرار ہوگئے تھے۔
ایڈوکیٹ ندیم نے عدالت کو مزید بتایا کہ بچوں کے والدین نے عدالت میں حلف نامہ داخل کیاہے اور انہیں معلمین اور مدرسہ سے کوئی شکایت نہیں ہے لہذ حافظ ابراہیم کو ضمانت پر رہا کیا جائے جسے تھانے عدالت کے ایڈیشنل سیشن جج ایم بی پٹواری نے منظور کرلیا۔
مدرسہ کے معلمین کے خلاف پولس نے تعزیرات ہند کی دفعہ 370,324,34اور جونائل جسٹس ایکٹ کی دفعہ 75 کے تحت مقدمہ قائم کیا ہے۔

About the author

Taasir Newspaper