Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ریاست

گاؤں والوں نے سڑک اور پل کی تعمیر میں بے قاعدگیوں کے تعلق سے رکن پارلیمینٹ کو سونپے عرضداشت

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 29th Dec.

ٹھاکرگنج، کشن گنج (محمد محیط حسن رضا)
 کشن گنج کے رکن پاریمینٹ ڈاکٹر محمد جاوید آزاد کو گذشتہ روز ارریہ سے گلگلیہ نیو بی جی لائن پروجیکٹ کے تحت زیر تعمیر ریلوے لائن میں، ٹھاکر گنج بلاک کے تاتپوا اور دلے گاوں کو جوڑنے والی اہم دیہی سڑک، کھونادیگھی پوکھر کے قریب انڈر پاس کلورٹ کی تعمیر کے سلسلے میں سابق مکھیا آفاق عالم کے بیٹے وسیم اکرام کی قیادت میں مقامی لوگوں نے ایک میمورنڈم سونپا۔ میمورنڈم میں ذکر کیا گیا ہے کہ  تاتپوا اور دلے گاؤں پنچایتوں کو جوڑنے والی اس وقت، نیسنل ہائیوئے327 ی  سے تاتپوا ہوتے ہوئے کادوگاؤں بازار اور دلے گاؤں پنچایت تک ایک دیہی سڑک ہے۔ جس میں ارریہ سے گلگلیہ تک نئی بی جی لائن پراجکٹ کا آغاز ہو چکی ہے۔ جس پر ریلوے ٹریک بچھانے کے لیے مٹی بھرائی کا کام جاری ہے۔ گاؤں والوں کا کہنا ہے کہ مذکورہ بی جی لائن تاتپوا پنچایت کے کھونادیگھی سے ہوتے ہوئے کدوگاؤں بازار تک پہنچے گی۔ جس کی وجہ سے ہمارے گاؤں کی مین پکی سڑک پڑتی ہے وہ سڑک سے محروم ہو جائے گا۔ گاؤں والوں کا کہنا ہے کہ ہمارے گاؤں میں اسٹیٹ بینک، سب ہیلتھ سنٹر، تھانہ، گرام کچہری اور ہاٹ بازار ہیں، جو آس پاس کے گاؤں اور پنچایتوں کے اہم مراکز ہیں۔ اگر اس سڑک پر مٹی بھر کر ریلوے لائن بنائی جائے تو ہم ہزاروں گاؤں والے کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ مذکورہ سڑک پر مٹی بھر کر ریلوے لائن کی پٹری بچھانے کے بجائے انڈر پاس (تل مارگ) کلورٹ بنا کر ریلوے لائن کا ٹریک بچھایا جائے۔ جس کی وجہ سے لوگوں کو سڑک سے آنے جانے میں مشکلات کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔ اور مذکورہ انڈر پاس (تل مارگ) کے ذریعے ریلوے لائن کو بھی صحیح طریقے سے شروع کیا جا سکتا ہے۔ دیہاتیوں کا کہنا ہے کہ مذکورہ پل کی تعمیر سے لوگوں کو سڑک پر ڈیڑھ کلومیٹر کا سفر کرنے سے بچایا جا سکتا ہے۔ دوسری جانب ایک اور میمورنڈم میں آر سی سی پل میں ناقص میٹریل کے استعمال کو لیکر سکھانی سے دلےگاؤں پنچایت کو جوڑنے والی مکھیہ منتری گرام سمپرک یوجنا کے تحت گرامین وکاس منترالہ ورلڈ بینک کی طرف سے فنڈڈ پروجیکٹ کے تحت سڑک کی تعمیر اور آر سی سی پل تعمیراتی کام ایم ایم جی ایس وائی کشن گنج-2 پارٹ-اے پارٹ-بی دونوں میں بے ضابطگیاں بڑتی جارہی ہیں۔  اسکیم کے تحت منظور شدہ مواد کی جگہ غیر معیاری مقامی ریت اور سلی گوڑی کے مقامی چپس کا استعمال کیا جارہا ہے۔ مذکورہ تعمیراتی جگہ پر تخمینہ بورڈ بھی نہیں لگایا گیا ہے۔ سائٹ انجینئر کبھی بھی سائٹ پر موجود نہیں ہوتا ہے۔ جس کی عدم موجودگی میں ٹھیکیدار کی جانب سے ناقص میٹریل کا اندھا دھند استعمال کیا جا رہا ہے۔ یہ جگہ میچی ندی ہند-نیپال سرحد کے قریب ہے۔ جو کہ سیکورٹی کے نقطہ نظر سے انتہائی اہم سڑک اور پل ہیں۔ پل میں بے ضابطگی ملکی سلامتی کے لیے خطرہ بن سکتی ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ مذکورہ منصوبے کی اعلیٰ سطحی انکوائری کرائی جائے۔ تاکہ سڑک اور پل کی تعمیر کا کام کوالٹی کے ساتھ بروقت مکمل کیا جا سکے۔ ورنہ ایسا نہ ہو کہ یہ پل افتتاح سے پہلے ہی منہدم ہو جائے اور ملکی سلامتی خطرے میں پڑ جائے۔

About the author

Taasir Newspaper