Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ریاست

شادی شدہ خاتون کو سسرال والوں نے جہیز کے لیے بے دردی سے موت کے گھاٹ اتارا۔

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 7th Jan.

سہرسہ/7جنوری(سالک کوثر امام) ضلع کے تحت صدر تھانہ حلقہ کے جرسین گاؤں میں جہیز کے لالچیوں کے ذریعے ہراساں کر ایک شادی شدہ خاتون کے بے دردی سے قتل کا معاملہ سامنے آیا ہے۔پولیس نے قتل کیس میں فوری کارروائی کرتے ہوئے دو افراد کو حراست میں لے کر پوچھ گچھ شروع کر دی ہے۔ دراصل یہ سارا معاملہ جرسین گاؤں کا ہے جہاں خوشبو کماری نامی 24 سالہ خاتون کو قتل کر دیا گیا ہے۔ مقتولہ خاتون کے شوہر انیش اور بھیسور منیش کمار پر قتل کا الزام لگایا گیا ہے۔واقعہ کی اطلاع ملتے ہی گھر سے مقتولہ کے اہل خانہ پہنچے جنہوں نے پولیس کو قتل کی اطلاع دی۔ جس کے بعد پولیس نے موقع پر پہنچ کر لاش کو قبضے میں لے کر پوسٹ مارٹم کے لیے صدر اسپتال سہرسہ بھیج دیا۔معلومات کے مطابق مقتولہ خوشبو کماری نے 4 سال قبل جرسین گاؤں کے رہنے والے انیش کمار سے بڑی دھوم دھام سے اور دونوں خاندانوں کی مرضی کے مطابق شادی کی تھی۔ شادی کے بعد دونوں جوڑے محبت کے ساتھ خوشگوار زندگی گزار رہے تھے۔اس دوران ان کے گھر ایک لڑکا اور ایک لڑکی کی بھی پیدائش ہوئی،اہل خانہ نے الزام لگایا کہ گزشتہ کچھ دنوں سے برابر جہیز کا مطالبہ کیا جا رہا تھا، جس پر اکثر جھگڑے ہوتے تھے۔ کیونکہ اس کی شادی اس کے چھوٹے بھائی سے ہوئی تھی، بڑے بھائی نے کہا کہ ہمیں شادی کے دس لاکھ مل رہے ہیں، اور تم کو صرف 5 لاکھ ہی ملے تھے، اس لیے 5 لاکھ کا برابر کا مطالبہ کیا جا رہا تھا،2 روز قبل بھی مقتولہ کو بھیسور نے مارا پیٹا جس کا علاج کر کے معاملہ رفع دفع ہو گیا۔ کل رات دیر گئے اس قدر لڑائی ہوئی کہ خوشبو کماری اس واقعہ میں جان کی بازی ہار گئی۔ اور مقتولہ خاتون دو چھوٹے بچوں کو چھوڑ کر دنیا کو الوداع کہہ گئی۔تاہم اس واقعہ میں صدر پولیس اسٹیشن انچارج سدھاکر کمار نے بتایا کہ جرسین گاؤں میں جہیز کے لیے ہراسانی کی وجہ سے ایک خاتون کے قتل کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ درخواست کی روشنی میں معاملے کی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

About the author

Taasir Newspaper