Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ملک بھر سے

لڑکی کی لاش کئی کلو میٹر تک گھسیٹنے کا معاملہ

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 2nd Jan.

مشتعل لوگوں نے تھانے کا کیا گھرائو،لڑکی کی ماں نے کہا کہ گنہگاروں کو پھانسی دو دہلی پولیس کے خلاف لگائے نعرے

نئی دہلی،2جنوری:کنجھاولا-سلطان پوری واقعہ سے مشتعل لوگوں نے آج تھانے کا گھیراؤ کیا اور دہلی پولیس کے خلاف نعرے لگائے۔ مظاہرین میں مقتولہ کی خالہ سمیت کئی خواتین بھی شامل تھیں۔ اس دوران دہلی کی روہنی عدالت نے پانچوں ملزمین کو تین دل کی پولیس ریمانڈ پر بھیج دیا ہے۔ اس معاملے نے سیاسی رنگ بھی اختیار کر لیا ہے۔ اے اے پی کارکنوں نے آج ایل جی آفس کے باہر احتجاج کرتے ہوئے دہلی کے ایل جی وی کے سکسینہ کے استعفیٰ کا مطالبہ کیا۔ ہجوم کو منتشر کرنے کے لیے پانی کا چھڑکائو کیا گیا۔ یکم جنوری کو لڑکی کی اسکوٹی سے ٹکرانے اور اس کی لاش کو کئی کلومیٹر تک گھسیٹنے کے معاملے سے لوگ کافی ناراض ہیں۔ خاندان کا الزام ہے کہ لڑکی کا اجتماعی عصمت دری کے بعد قتل کیا گیا تھا اور یہ نربھیا واقعہ سے ملتا جلتا واقعہ ہے۔ تاہم پولیس نے زیادتی کے واقعے سے انکار کیا ہے۔گرفتار پانچوں ملزمان کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔ تھانے کے باہر احتجاج کرنے والی متاثرہ لڑکی کی خالہ نے بتایا کہ سردی کے موسم میں لڑکیاں 5-6 کپڑے پہنتی ہیں لیکن ان کے جسم پر ایک کپڑا نہیں ہوتا۔ کل صبح 7 بجے سے لے کر آج تک متوفی کو نہیں بتایا گیا اور نہ ہی اس کی لاش اور چہرہ دکھایا گیا۔ اس نے یہ بھی نہیں بتایا کہ وہ کس ہسپتال میں ہے۔ جب ہمارے بڑے بھائی آئے تو پولیس نے انہیں بتایا کہ ہاں، لاش سنجے گاندھی میموریل ہسپتال میں ہے۔مزید کہا کہ میں لڑکی کی خالہ ہوں۔مقتولہ کی خالہ نے مطالبہ کیا ہے کہ مجرموں کو ہمارے حوالے کیا جائے ورنہ انہیں سرعام پھانسی دی جائے۔ ہم اپنی بیٹی کے لیے انصاف چاہتے ہیں۔ خالہ نے یہ کہتے ہوئے دم دبا دیا کہ وہ (متاثرہ) اپنا سارا گھر چلا رہی ہے، اس کی والدہ کے دونوں گردے فیل ہیں اور تین بہن بھائی چھوٹے ہیں۔ ہسپتال والوں نے ماں کو جواب دے دیا ہم خالہ اور ماموں سب کچھ دیکھ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کی طرف سے کچھ نہیں بتایا گیا، وہ صرف یہ کہہ رہے ہیں کہ یہ حادثہ ہے۔ کل صبح سے وہی کہہ رہے ہیں۔دریں اثنا ء عام آدمی پارٹی کے رہنما سوربھ بھردواج نے پیر کو الزام لگایا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے رکن منوج متل کنجھوالا-سلطان پوری کیس میں گرفتار پانچ ملزمان میں سے ایک ہیں اور پولیس اسٹیشن کے باہر ان کی تصویر والا ہورڈنگ لگا دیا گیا ہے جہاں وہ اور ان کے دوست ہیں۔ بند کانجھا والا میں 20 سالہ لڑکی کی اسکوٹی کو کار نے ٹکر مار دی اور لڑکی کو سلطان پوری سے تقریباً پانچ کلومیٹر تک گھسیٹتے ہوئے کنجھا والا لے گئی۔ اتوار کو اس حادثے میں لڑکی کی موت ہو گئی۔خواتین کے قومی کمیشن نے کانجھا والا عصمت دری متاثرہ کی لاش کا پوسٹ مارٹم کرانے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ یہ معلوم کیا جا سکے کہ آیا اس کے ساتھ جنسی زیادتی کی گئی تھی۔ کمیشن نے کہا کہ اگر مقتول کی والدہ کے الزامات درست ثابت ہوتے ہیں تو متعلقہ دفعات کے تحت ایف آئی آر بھی درج کی جائے۔

About the author

Taasir Newspaper