Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ریاست

وزیر اعلیٰ نے بہادر مہارانہ پرتاپ کے قد آدم مجسمہ کا افتتاح کیا۔

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 19th Jan.

• 9 مئی کو مہارانا پرتاپ کا یوم پیدائش سرکاری تقریب کے طور پر منایا جائے گا – وزیر اعلی

پٹنہ، 19 جنوری، 2023:- وزیر اعلیٰ جناب نتیش کمار نے آج ایس پی ورما روڈ، فریزر روڈ، پٹنہ کے مہانے پر نو تعمیر شدہ پارک میں شورویر مہارانا پرتاپ کے قد آدم مجسمے کا افتتاح کیا۔ افتتاح کے بعد وزیر اعلیٰ نے  مہارانا پرتاپ کے مجسمے پر گلپوشی کرکے انہیں خراج عقیدت پیش کیا اور نئے تعمیر شدہ پارک کا بھی معائنہ کیا۔اس موقع پر پٹنہ کے ڈویژنل کمشنر مسٹرکمار روی نے وزیر اعلیٰ کو ایک مومینٹو اور کتاب پیش کرتے ہوئے ان کا استقبال کیا۔ اس موقع پر نائب وزیر اعلیٰ مسٹر تیجسوی پرساد یادو، فینانس، کمرشل ٹیکس اور پارلیمانی امور کےوزیر جناب وجے کمار چودھری، آبی وسائل و اطلاعات اور رابطہ عامہ کے وزیر جناب سنجے کمار جھا، عمارت تعمیرات کے وزیر جناب اشوک چودھری، خوراک اور صارفین  تحفظ کی وزیر محترمہ لیسی سنگھ، قانون ساز کونسل کے رکن جناب سنجے سنگھ، قانون ساز کونسل کے رکن مسٹر سنگھ سنجے کمار سنگھ عرف گاندھی جی، پٹنہ کے ڈویژنل کمشنر مسٹر کمار روی، چیف منسٹر کے او ایس ڈی مسٹر گوپال سنگھ، ڈی ایم پٹنہ ڈاکٹر چندر شیکھر سنگھ، پٹنہ کے ایس ایس پی مسٹر مانوجیت سنگھ ڈھلون، سابق جنرل سکریٹری۔ ریاستی سول کونسل مسٹر اروند کمار سنگھ اور دیگر عوامی نمائندے اور معززین موجود تھے۔نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ آج یہاں مہارانا پرتاپ صاحب کا مجسمہ نصب کیا گیا ہے۔ ان کا انتقال اسی دن ہوا۔ مہارانا پرتاپ کی سالگرہ کے موقع پر ایک سرکاری تقریب کا اہتمام کیا گیا ہے۔ مہارانا پرتاپ کے یوم پیدائش کے موقع پر ہر سال 9 مئی کو ریاستی تقریب کا اہتمام کیا جائے گا۔ مہارانا پرتاپ کی برسی کے موقع پر بھی ریاست بھر میں تقریبات کا اہتمام کیا گیا ہے۔ انہوں نے ملک کے لیے بہت بڑا تعاون کیا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ نئی نسل کے لوگ بھی مہارانا پرتاپ کے بارے میں سب کچھ جانیں۔ عوام کے مفاد میں کام کیا۔ جب مہارانا پرتاپ حکومت کر رہے تھے اور ایک عورت کو گرفتار کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ عورت کو کیوں گرفتار کیا گیا ہے، اسے چھوڑ دو، یہ بڑی بات ہے۔ ہم ہمیشہ کہتے رہے ہیں کہ خواتین کے مفاد میں کام کیا جائے۔ مہارانا پرتاپ نے اپنے زمانے میں جو کام کیا، ا سے نئی نسل کو معلوم ہونا چاہیے۔ان کی یاد میں بڑے بڑے پروگرام منعقد کیے جاتے ہیں۔ کافی دنوں سے ہمارے ذہن میں تھا کہ یہاں مہارانا پرتاپ کا مجسمہ نصب کیا جائے۔ آج وہ کام ہو گیا ہے۔ یہاں لوگ جس طرف سے بھی آئیں گے، انہیں ان کا مجسمہ نظر آئے گا۔ اسی لیے ہم نے اس جگہ کا انتخاب کیا ہے۔ نئی نسل سے لے کر پرانی نسل تک کے لوگ بھی ان سے تحریک لیں گے۔تلنگانہ کے چیف منسٹر جناب کے چندر شیکھر راؤ کے پروگرام میں نہ بلائے جانے کے سوال پر وزیر اعلی نے کہا کہ ہم نہیں جانتے۔ ہم لوگ تودوسرے کاموں میں مصروف ہیں۔جن کو موقع ملا ہوگا، وہ گئے ہوں گے۔ اس میں ایسی کوئی بات نہیں ہے۔ یہ ان کی پارٹی کا جلسہ تھا۔ جو لوگ اس جلسے میں گئے، یہ اچھی بات ہے۔ ہم دن رات یہاں کام میں لگے ہوئے ہیں۔ اس دوران اگر کوئی مجھے بلا بھی لے تو میں نہیں جا سکتا۔ یہ سب کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ ایسی کوئی بات نہیں کہ کئی پارٹیوں کا ایک گروپ بن جائے۔ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ بھی یہاں آئے تھے۔مسٹر کے چندر شیکھر راؤ یا کانگریس کے ساتھ جانے کے سوال پروزیر اعلی نے کہا کہ ایک بار ہم نے تمام لوگوں سے بات کرچکے ہیں۔آگے دیکھا جائے گاکہ کیا ہوگا، کتنے لوگ متحد ہوں گے۔ اس کے آگے ہم سب لوگ لگ جائیں گے۔بہار میں ہم سب لوگ لگے ہوئے ہیں۔ بہت سے لوگوں سے بات کی۔ سمادھان یاترا کے بعد بہار میں مقننہ کا اجلاس شروع ہونے والا ہے۔ اس کے بعد ہم لوگ فری ہوجائیں گے اور آگے جو بھی کرنا ہے وہ کریں گے۔
ملک بھر میں دورے کی بحث کے سوال پر وزیر اعلیٰ نے کہا کہ اگر چرچا  ہے تو آپ لوگ کرتے رہئے ۔ آپ لوگ جہاں کہیں گے ہم وہاں چلے جائیں گے۔ اگر کوئی ہمیں دعوت دیتا ہے تو ہم وہاں جائیں گے۔ میری اپنی کوئی خواہش نہیں ہے۔ ہمیں کچھ نہیں چاہیے۔ ہم صرف ایک چیز چاہتے ہیں کہ اپوزیشن کے زیادہ سے زیادہ لوگ متحد ہو کر آگے بڑھیں۔ یہ ملک کے مفاد میں ہے۔ ہم اپنے لیے کچھ نہیں کر رہے ہیں۔ مرکزی وزیر جناب اشونی چوبے کے دھرنے پر بیٹھنے کے سوال پر وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ان کے دھرنے پر بیٹھنے پر کوئی پابندی نہیں ہے۔

About the author

Taasir Newspaper