Pin-Up Казино

Не менее важно и то, что доступны десятки разработчиков онлайн-слотов и игр для казино. Игроки могут особенно найти свои любимые слоты, просматривая выбор и изучая своих любимых разработчиков. В настоящее время в Pin-Up Казино доступно множество чрезвычайно популярных видеослотов и игр казино.

ریاست

گنا کاشتکاروں کو بڑا تحفہ

Written by Taasir Newspaper

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 25th Jan.

چنڈی گڑھ،25جنوری: وزیر اعلیٰ منوہر لال کی قابل قیادت میں ہریانہ حکومت کسانوں کی ترقی کے لیے مسلسل کوشاں ہے۔ کسانوں کی فصلوں کو ہونے والے نقصان کی تلافی ہو یا فصلوں کی اچھی قیمت دینا، حکومت ہمیشہ کسانوں کے ساتھ کھڑی ہے۔ اس سوچ کو پیش کرتے ہوئے، حکومت نے کرشنگ سیزن 2022-23کے لیے گنے کی ریاستی مشاورتی قیمت (ایس اے پی) کو 362 روپے فی کوئنٹل سے بڑھا کر 372 روپے فی کوئنٹل کر دیا ہے۔ کسان حکومت کے اس فیصلے سے بہت خوش ہیں اور انہوں نے اس کے لیے وزیر اعلیٰ منوہر لال کا شکریہ ادا کیا ہے۔وزیر اعلیٰ منوہر لال نے کہا کہ ہریانہ حکومت گنے کے کسانوں کو ہمیشہ اعلیٰ ترین ریاستی مشاورتی قیمت (ایس اے پی) دیتی رہی ہے۔ سال 2019-20میں، ہریانہ میں گنے کی اسٹیٹ ایڈوائزری پرائس (ایس اے پی) 340 روپے تھی جبکہ اسی مدت کے دوران پنجاب میں 310 روپے، اتر پردیش میں 325 روپے اور اتراکھنڈ میں 326 روپے فی کوئنٹل دی جا رہی تھی۔ جب کہ سال 2020-21میں، ہریانہ میں گنے کی اسٹیٹ ایڈوائزری پرائس (ایس اے پی) 350 روپے تھی جبکہ پنجاب میں یہ 310 روپے، اتر پردیش میں 325 روپے اور اتراکھنڈ میں 326 روپے فی کوئنٹل تھی۔ اسی طرح ریاست میں گنے کی اسٹیٹ ایڈوائزری پرائس (ایس اے پی) 2021-22میں 362 روپے مقرر کی گئی تھی۔ اس مدت کے دوران گنے کی ریاستی مشاورتی قیمت (ایس اے پی) ہریانہ کے پڑوسی پنجاب میں 360 روپے، اتر پردیش میں 350 روپے اور اتراکھنڈ میں 355 روپے فی کوئنٹل رہی۔ منوہر لال نے کہا کہ شوگر ملوں کو گنے کی قیمت ادا کرنے میں بھی ہریانہ دیگر ریاستوں سے آگے ہے۔ جبکہ ہریانہ میں سال 2020-21میں پوری ادائیگی ہو چکی ہے، پنجاب اور اتر پردیش میں واجبات ابھی باقی ہیں۔ اسی طرح 2021-22کی ادائیگی بھی ہریانہ حکومت نے کی ہے، اب صرف پی ڈی سی کی ادائیگی باقی ہے جو کہ 17.94 کروڑ روپے ہے جب کہ اس کرشنگ سیزن میں پنجاب پر 37.04 کروڑ روپے کی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاستی حکومت گنے کے کاشتکاروں کی حوصلہ افزائی اور کوآپریٹو شوگر ملوں کو مضبوط کرنے کے لیے مسلسل کام کر رہی ہے۔ کوآپریٹو شوگر ملوں میں ایتھنول پلانٹس لگا کر تنوع کے لیے اقدامات کیے جا رہے ہیں، شوگر ملوں میں بجلی کی مشترکہ پیداوار، جیو پراڈکٹس جیسے مولاس، بیگاس، پریس مڈ وغیرہ کا تجارتی استعمال۔

About the author

Taasir Newspaper