ریلوے بھرتی گھوٹالہ میں لالو، رابڑی اور میسا بھارتی کو ضمانت

Taasir Urdu News Network – Syed M Hassan 15th March

نئی دہلی، 15 مارچ: دہلی کی راوس ایونیو کورٹ نے ریلوے بھرتی گھوٹالہ کیس میں بہار کے سابق وزیر اعلی لالو پرساد یادو، ان کی اہلیہ رابڑی دیوی اور ان کی بیٹی آر جے ڈی رکن پارلیمنٹ میسا بھارتی کو ضمانت دے دی۔ خصوصی جج گیتانجلی گوئل نے 50000 روپے کی مچلکے پر ضمانت منظور کی۔
لالو، رابڑی اور میسا بھارتی آج راؤس ایونیو کورٹ میں پیش ہوئے۔ 27 فروری کو عدالت نے ان تینوں سمیت تمام ملزمان کے خلاف دائر چارج شیٹ کا نوٹس لیا تھا۔ 7 اکتوبر 2022 کو ریلوے بھرتی گھوٹالہ کیس میں سی بی آئی نے دہلی کی راؤس ایونیو کورٹ میں لالو پرساد یادو، رابڑی دیوی اور میسا بھارتی سمیت 16 ملزمان کے خلاف چارج شیٹ داخل کی تھی۔
ریلوے بھرتی گھوٹالہ کیس میں بھولا یادو اور ہردیانند چودھری کو سی بی آئی نے گرفتار کیا تھا۔ بھولا یادو 2004 سے 2009 تک لالو یادو کے او ایس ڈی رہے تھے۔ ریلوے بھرتی گھوٹالہ لالو یادو کے بطور وزیر ریلوے کے دور کا ہے۔ بھولا یادو کو اس گھوٹالے کا ماسٹر مائنڈ مانا جاتا ہے۔ الزام ہے کہ جب لالو یادو ریلوے کے وزیر تھے تو نوکری کے بدلے زمین دینے کو کہا جاتا تھا۔ بھولا یادو کو نوکری کے بدلے زمین دینے کا کام سونپا گیا تھا۔
بھولا یادو 2015 کے بہار قانون ساز اسمبلی انتخابات میں بہادر پور سیٹ سے ایم ایل اے منتخب ہوئے تھے۔ آپ کو بتا دیں کہ مئی کے تیسرے ہفتے میں سی بی آئی نے اس معاملے میں لالو یادو کے خاندان والوں سے متعلق 17 مقامات پر چھاپے مارے تھے۔ سی بی آئی نے لالو یادو، ان کی بیوی رابڑی دیوی اور بیٹی میسا بھارتی کے پٹنہ، گوپال گنج اور دہلی کے احاطے پر چھاپہ ماری کی تھی ۔ اس معاملے میں سی بی آئی نے 23 ستمبر کو ابتدائی تفتیش درج کی تھی۔