اسرائیل نے غزہ پٹی پر فضائی حملے روکے، لبنان میں حزب اللہ کے ٹھکانوں پر گرائے بم

تاثیر،۱۰  نومبر۲۰۲۳:- ایس -ایم- حسن

تل ابیب/یروشلم، 10 نومبر: غزہ پٹی پر جنگ کے 35ویں دن اسرائیل نے عالمی برادری سے کیے گئے وعدے کے مطابق فضائی حملے بند کر دیے۔ فضائی حملے بند ہوتے ہی فلسطینی شہریوں نے غزہ پٹی سے نکلنا شروع کر دیا ہے۔
میڈیا رپورٹس کے مطابق اسرائیلی ڈیفنس فورسز (آئی ڈی ایف) نے آج صبح اعلان کیا ہے کہ غزہ میں فضائی حملے فی الحال بند کر دیے گئے ہیں تاکہ شہری نقصان کو کم کیا جا سکے۔ لیکن حزب اللہ کی کارروائیوں کو دیکھ کر آئی ڈی ایف کے جنگی طیاروں نے لبنان میں اس کے جنگجووں کے ٹھکانے کو بمباری کرکے تباہ کر دیا۔
ادھر اسرائیلی وزیراعظم بنجامن نیتن یاہو نے واضح کیا ہے کہ اسرائیل غزہ پر قبضہ نہیں کرنا چاہتا۔ غزہ میں مستقبل میں ایک مضبوط سویلین حکومت کی ضرورت ہو گی، تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جا سکے کہ 7 اکتوبر جیسا حملہ دوبارہ نہ ہو۔ ایک اور رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ہیومن رائٹس واچ کو غزہ کے الشفا اسپتال کے ارد گرد اسرائیل اور حماس کی لڑائی پر شدید تشویش ہے۔ ہیومن رائٹس واچ نے عالمی رہنماوں پر مداخلت کی اپیل کی ہے۔
اسرائیل کی جانب سے بروز جمعہ حملے ملتوی کرنے کے بعد امریکہ نے راحت کی سانس لی ہے۔ اسے امید ہے کہ اب اس کے یرغمال شہریوں کو حماس کی قید سے آزاد کرانے میں آسانی ہوگی۔ بعض رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ جمعرات کو غزہ شہر میں اسرائیلی فوجیوں اور حماس کے جنگجووں کے درمیان تقریباً 10 گھنٹے تک براہ راست لڑائی جاری رہی۔ اس دوران اسرائیل نے حماس کے ایک مضبوط ٹھکانے کو تباہ کر دیا۔