’یونیسکو‘ کا پریس فریڈم پرائز غزہ میں فلسطینی صحافیوں کے نام

تاثیر،۴       مئی ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

پیرس،03مئی:اقوام متحدہ کے تعلیم ، سائنس وثافت کے ادارے’یونیسکو‘ نے غزہ کی پٹی میں ان تمام فلسطینی صحافیوں کو پریس فریڈم پرائز سے نوازا جو اسرائیل اور حماس کے درمیان 6 ماہ سے زائد عرصے سے جاری جنگ کی کوریج کررہے ہیں۔بین الاقوامی میڈیا جیوری کے صدر موریسیو ویبل نے کہا کہ “اس طرح کے تاریک اور مایوس کن اوقات میں ہم ایسے المناک حالات میں اس بحران کی کوریج کرنے والے فلسطینی صحافیوں کے ساتھ یکجہتی کا ایک مضبوط پیغام شیئر کرنا چاہیں گے۔انہوں نے مزید کہاکہ “ہم بحیثیت انسان ان کی ہمت اور آزادی اظہار کے عزم کی پرزور حمایت کرتے ہیں‘‘۔
’یونیسکو‘ کے ڈائریکٹر جنرل آڈری ازولے نے کہا کہ یہ ایوارڈ “مشکل اور خطرناک حالات کا سامنا کرنے والے صحافیوں کی ہمت کو خراج تحسین پیش کرتا ہے”۔نیویارک میں قائم کمیٹی ٹو پروٹیکٹ جرنلسٹس کے مطابق اکتوبر میں جنگ شروع ہونے کے بعد سے کم از کم 97 صحافی مارے جا چکے ہیں جن میں 92 فلسطینی بھی شامل ہیں۔غزہ کی پٹی میں جنگ اس وقت شروع ہوئی جب حماس نے سات اکتوبر کو جنوبی اسرائیل پر غیر معمولی حملہ کیا جس میں 1,170 افراد ہلاک ہوئے، جن میں سے زیادہ تر عام شہری تھے۔اسرائیلی حکام کے مطابق 250 سے زائد افراد کو اغوا کیا گیا، جن میں سے 129 اب بھی غزہ میں زیر حراست ہیں، اور ان میں سے 34 مارے جا چکے ہیں۔حملے کے جواب میں اسرائیل نے حماس کو ختم کرنے کا وعدہ کیا اور اس کے بعد سے غزہ کی پٹی میں تباہ کن بمباری کی مہم اور زمینی کارروائیاں شروع کیں جس میں 34,596 افراد لقمہ اجل بن چکے ہیں جن میں زیادہ تر عام شہری ہیں۔