ایل جی منوج سنہا نے ریاسی دہشت گردانہ حملے میں زخمی ہونے والوں کی خیریت دریافت کی

تاثیر۱۰       جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

جموں ،10 جون:جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہا کہ ضلع ریاسی میں ایک بس پر دہشت گرد حملہ جموں خطے میں افراتفری پھیلانے کے مذموم منصوبے کا حصہ ہے۔لیکن سیکورٹی فورسسز کی طرف سے اس طرح کی کوشش کو ناکام بنایا جائے گا۔ اتوار کو ضلع ریاسی میں دہشت گردوں نے یاتریوں کو لے جانے والی بس پر فائرنگ کر دی جس میں 9 افراد جاں بحق اور 41 دیگر زخمی ہو گئے۔اس دہشت گردانہ حملے میں ملوث دہشت گردوں کو کیفرکردار تک پہنچانے کے لئے پولیس، سی آر پی ایف اور فوج کا مشترکہ آپریشن جاری ہے۔
لیفٹیننٹ گورنر نے گورنمنٹ میڈیکل کالج جموں میں زخمیوں کی خیریت دریافت کی۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کے ڈائریکٹر جنرل آر آر سوین اپنی ٹیم کے ساتھ انسداد دہشت گردی آپریشن کی نگرانی کر رہے ہیں۔سنہا نے کہا کہ ہماری فوری ترجیح زخمیوں کی جان بچانا ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ جانی نقصان کا کوئی معاوضہ نہیں ہے لیکن خاندانوں کی مدد کے لیے انتظامیہ نے ہلاک ہونے والوں کے لواحقین کے لیے فی کس 10 لاکھ روپے اور زخمیوں کے لیے پچاس ہزار روپے کی ایکس گریشیا کی منظوری دی ہے۔
لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی اور مرکزی وزیر امت شاہ صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں اور حملے کے فوراً بعد ان سے بات کی۔ لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ وہ ضلع ریاسی کے کٹرا علاقے میں نارائن اسپتال کا بھی دورہ کریں گے اور وہاں داخل 14 دیگر زخمیوں کی خیریت دریافت کریں گے۔