تمام سرکاری حکام کو بہار عوامی شکایات کے حقوق ایکٹ کے تحت درج مقدمات میں بروقت بامعنی کارروائی کی رپورٹ فراہم کرنی چاہیے : ڈی ایم

تاثیر۲۳      جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

دربھنگہ(فضا امام) 23 جون:- ضلع مجسٹریٹ دربھنگہ مسٹر راجیو روشن نے تمام سرکاری حکام کو ایک خط جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ بہار عوامی شکایات کے ازالے کے حقوق ایکٹ حکومت کی ایک مہتواکانکشی اسکیم ہے جس میں عام لوگوں کو اس بارے میں معلومات فراہم کی جائیں گی۔ ایک مقررہ مدت کے اندر ان کی طرف سے دائر کیے گئے مقدموں کا ایک بامعنی حل فراہم کیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس ایکٹ کے تحت دائر مقدمات کو 60 کام کے دنوں میں حل کرنے کا انتظام ہے۔ اسکیم کے کامیاب نفاذ کے لیے، مقررہ مدت کے اندر شکایت/اپیل کنندہ کے مطابق مزید کارروائی کی جاتی ہے اور رپورٹ فراہم کرنے کے بعد ہی اس کا حل/عمل درآمد کیا جاتا ہے۔ بہار عوامی شکایات کے ازالے کے قانون کے تحت دائر مقدمات کی سماعت کے دوران یہ بات سامنے آرہی ہے کہ پبلک اتھارٹی کی شکایات/اپیلوں کی سماعت میں شرکت کرنے کے بجائے نچلے درجے کے ملازمین یا وہ ملازمین جن کو اس موضوع کا علم نہیں ہے۔ ان کی موجودگی کی اجازت کے بغیر انہیں سماعت کے لیے بھیجا جاتا ہے، جس کی وجہ سے شکایت کنندگان/ اپیل کنندگان بھی اپنے غصے کا اظہار کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ کچھ لوگ ایسے بھی ہیں جو کبھی بھی سماعت میں حاضر نہیں ہوتے۔ انہوں نے کہا کہ بہار عوامی شکایات کے ازالے کے قانون میں واضح ہدایت ہے کہ سماعت میں پبلک اتھارٹی کو خود حاضر ہونا چاہیے، اگر ناگزیر وجوہات کی وجہ سے پبلک اتھارٹی خود موجود نہیں ہے، تو ایسی صورتحال میں کوئی ماتحت افسر، جو شکایت کے موضوع سے متعلق ہے، اسے سماعت میں حصہ لینے کا اختیار دیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات میں جو لوگ اتھارٹی سے دور ہیں اور آنے سے قاصر ہیں ان کے لیے بھی گوگل میٹ کے لنک کے ذریعے سماعت کا انتظام کیا گیا ہے۔meet.google.com/rrp-hbcu-azq ، لیکن کچھ لوگ آنے سے قاصر ہیں حکام نے مذکورہ لنک کے ذریعے رابطہ قائم کرنے سے لاتعلقی کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ مذکورہ صورتحال کی وجہ سے شکایت کی سماعت طویل عرصے تک جاری رہتی ہے اور شکایات/اپیلوں کے بامعنی حل کے بعد ایکشن رپورٹ بروقت دستیاب نہیں ہوتی جس کے نتیجے میں مقدمات میں توسیع ہو جاتی ہے جس کی وجہ سے اس کا اثر ضلع کی درجہ بندی پر بھی پڑ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ تمام لوگوں اور حکام کو ہدایت دی جاتی ہے کہ وہ اپنے طور پر حاضر نہ ہونے کی صورت میں یا بہار عوامی شکایات کے ازالے کے حقوق ایکٹ سے متعلق شکایات/اپیلوں کی سماعت میں محکمے کی ہدایات پر عمل کریں۔ ناگزیر وجوہات/خصوصی حالات کی وجہ سے ماتحت افسر، جو شکایت کے موضوع سے بخوبی واقف ہے، کو چاہیے کہ وہ ایک بااختیار نمائندے کے ذریعے سماعت میں شرکت کے لیے اجازت نامہ کے ساتھ اپنی موجودگی کو یقینی بنائے۔ سماعت۔ بصورت دیگر متعلقہ پبلک اتھارٹی کے خلاف بہار عوامی شکایات کے ازالے کی دفعات کے تحت محکمہ کو جرمانہ اور محکمانہ کارروائی کی سفارش کی جائے گی۔