راہل گاندھی کو سلطان پور کورٹ میں پیش ہونے کا حکم

تاثیر۲۶      جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

نئی دہلی،26 جون :کانگریس لیڈر راہل گاندھی مشکل میں ہیں۔ سلطان پور کی ایم پی/ایم ایل اے عدالت نے راہل گاندھی کو ہتک عزت کیس میں 2 جولائی کو ذاتی طور پر حاضر ہونے کو کہا ہے۔ بڑی بات یہ ہے کہ ہتک عزت کا معاملہ وزیر داخلہ امت شاہ پر کیے گئے ایک متنازعہ تبصرہ سے متعلق ہے۔ دراصل 2018 کے کرناٹک انتخابات کے دوران راہل گاندھی نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے ایک متنازعہ بیان دیا تھا۔انہوں نے کہا تھا کہ بی جے پی یہ ضرور کہتی ہے کہ وہ صاف ستھری سیاست کرتی ہے، اسے اس پر پورا بھروسہ ہے، لیکن پارٹی صدر خود ایک قتل کیس میں ملزم ہیں۔ اب سمجھنے کی بات یہ ہے کہ جس وقت راہل نے یہ بیان دیا اس وقت امت شاہ بی جے پی کے صدر تھے۔ اسی کیس میں ان کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ درج کیا گیا تھا اور اب انہیں پیش ہونے کو کہا گیا ہے۔ راہل کے خلاف عرضی داخل کرنے کا کام بی جے پی لیڈر وجے مشرا نے کیا تھا۔تاہم اس معاملے میں 20 فروری کو راہل گاندھی کو راحت دیتے ہوئے عدالت سے ضمانت مل گئی۔ لیکن پھر بھی معلوم ہوا کہ یہ ایک عارضی راحت ہے اور راہل کو عدالت میں حاضر ہونا پڑے گا۔ اب اسی سلسلے میں راہل کو عدالت میں حاضر ہونے کی ہدایت دی گئی ہے۔ سوال یہ ہے کہ کیا راہل گاندھی عدالت میں پیش ہوں گے یا نہیں؟ تاہم اس تنازعہ پر کانگریس کی جانب سے ابھی تک کوئی ردعمل نہیں دیا گیا ہے، راہل گاندھی نے بھی کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے۔