ضلع پریشد رکن کے قتل معاملے میں تین نامعلوم افراد کے خلاف ایف آئی آر درج، پولیس کی چھاپہ ماری جاری

تاثیر۲۸      جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

مشرقی چمپارن، 28 جون:ضلع پریشد علاقہ نمبر 23 کے ضلع پریشد ممبر سریش یادو کا گولی مار کر کئے گئے قتل معاملے میں جمعرات کے روز پریشد رکن کے بھائی وجے یادو نے ٹاو?ن تھانہ میں تین نا معلوم لوگوں کے خلاف ایف آئی آر درج کرائی ہے۔ واقعہ کو لے کر ایس پی کانتیش کمار مشرا کے ذریعہ تشکیل دی گئی ایس آئی ٹی بدمعاشوں کے خلاف چھاپہ ماری کر رہی ہے اور سات سے زیادہ مشتبہ افراد کو حراست میں لے کر پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ جمعرات کی دیر رات تک ضلع کے سگولی، رگھوناتھ پور، ہرسدھی، اریراج، پپرا کوٹھی اور بنجریا تھانہ علاقوں کے کئی علاقوں میں چھاپہ ماری کی گئی۔
پولیس کا کہنا ہے کہ قتل میں ملوث شوٹر کی شناخت کر لی گئی ہے۔ شناخت کیے گئے شوٹر کے گھروں پر بھی چھاپہ ماری کی گئی ہے۔ پولیس کا دعویٰ ہے کہ تفتیش کے دوران یہ بات واضح ہو گئی ہے کہ شناخت شدہ شرپسندوں نے ہی اس واردات کو انجام دیا ہے۔ پولیس نے موقع سے برآمد ہونے والے موبائل فون اور دھنوتی ندی کے کنارے سے برآمد ہونے والی موٹر سائیکل کے مالک کی بھی شناخت کر لی ہے۔ ان میں سے دو شرپسندوں کی مکمل شناخت کر لی گئی ہے۔
بتایا گیا ہے کہ واردات میں استعمال ہونے والی سیاہ رنگ کی اپاچی موٹر سائیکل سگولی کے ایک نوجوان کی ہے جس سے جس کو لے کر اس کا بائک مکینک بھائی لکی نکلا تھا۔ واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج میں اپاچی بائک لکی چلاتے ہوئے نظر آرہی ہے۔ مذکورہ فوٹیج کی تصدیق لکی کے اہل خانہ نے بھی کی ہے۔ جائے وقوعہ سے برآمد ہونے والا موبائل فون اریراج کے راج کمار پاسوان کا بتایا جاتا ہے، جس کا کور راج کمار کے گھر سے برآمد ہوا، جب کہ موبائل کا سم کارڈ فرضی نام اور پتہ پر پایا گیا۔
پولیس کے مطابق دونوں شناخت شدہ بدمعاشوں کا ابھی تک کوئی جرم کا ریکارڈ سامنے نہیں آیا ہے، اس لیے ایسا لگتا ہے کہ کسی نے ان بدمعاشوں کو قتل کا ٹھیکہ دیا ہوگا۔ جس کا انکشاف ان شرپسندوں کی گرفتاری کے بعد ہی ہو گا۔ فی الحال ان کی گرفتاری کے لیے چھاپہ ماری کی جارہی ہے۔