مزدلفہ کی مسجد ’المشعر الحرام‘ میں حجاج کرام کے لیے بہترین انتظامات

تاثیر۱۶      جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

مکہ مکرمہ،16جون:۔سعودی اسلامی امور کی وزارت نے اس سال 1445 ہجری کے حج کے دوران عازمین کے استقبال کے لیے مزدلفہ کی جامع مسجد میں بھرپور تیاریاں کیں۔ مسجد میں معیاری آگاہی اور رہنمائی کی خدمات فراہم کی گئیں۔ الیکٹرانک خدمات، انٹرایکٹو انڈیکیٹیو اسکرینز اور وائی فائی سروس کا مربوط نظام پیش کیا گیا۔ ضیوف الرحمٰن کی خدمت اور تسلی کے لے سعودی دانش مند قیادت کی ہدایات پر ہر طرح کی سہولیات فراہم کرنے کی کوشش کی گئی تھی۔
وزارت اسلامی امور نے مزدلفہ میں مسجد ’’ المشعر الحرام‘‘کے لیے کئی ترقیاتی منصوبے نافذ کئے تھے۔ مسجد میں 3994.870 ملین ریال سے ایئر کنڈیشنگ اور ہوا صاف کرنے کے نظام کا منصوبہ، مسجد کو پرتعیش قالینوں سے آراستہ کرنے کا منصوبہ، باتھ رومز کی دیکھ بھال اور ترقی کا منصوبہ، معذور افراد کے لیے خصوصی باتھ رومز کا اضافہ اور مسجد میں بیک اپ جنریٹر شامل کرنے جیسے اقدامات کئے گئے۔ نگرانی کے لیے کیمروں کا نظام اور حجاج کو تعلیم دینے کے لیے انٹرایکٹو سکرینز بھی نصب کی گئیں۔مزدلفہ میں مشاعر مقدسہ کا ذکر اللہ تعالی کے اس فرمان میں کیا گیا ہے۔ ’’ ف?ذا ?فضتم من عرفات فاذ?روا الل? عند المشعر الحرام ‘‘ یعنی جب تم عرفات سے نکلو تو مشاعر مقدسہ میں خدا کو یاد کرو۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم مزدلفہ کے شروع میں ہی شارع نمبر پانچ سے قبلہ کی طرف اترتے تھے۔ یہاں پر اب مسجد ’’مشعر حرام‘‘ ہ۔ یہ مسجد الخیف سے تقریباً 5 کلومیٹر کے فاصلے پر ہے اور نمرہ مسجد سے 7 کلومیٹر کے فاصلے پر ہے۔
تیسری صدی ہجری کے آغاز میں اس کی چھت نہیں تھی اور اس کے چھ دروازے تھے۔ اس کی لمبائی مشرق سے مغرب تک 90 میٹر اور چوڑائی 56 میٹر تھی۔ اب اس میں 12 ہزار سے زیادہ نمازیوں کی گنجائش ہے اور اس کے 32 میٹر اونچے دو مینار بھی ہیں۔