نو منتخب ایم پی اکھلیش یادو ایس پی پارلیمانی پارٹی کے لیڈر منتخب، کرہل سیٹ چھوڑیں گے

تاثیر۸       جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

لکھنؤ، 08 جون : اترپردیش کے قنوج سے نو منتخب لوک سبھا ممبر اور ایس پی صدر اکھلیش یادو کو ہفتہ کو پارلیمانی پارٹی کا لیڈر منتخب کیے جانے کے بعد یہ واضح ہو گیا ہے کہ وہ اب مرکزی سیاست کریں گے اور اسمبلی کی رکنیت سے استعفیٰ دے دیں گے۔ اکھلیش مین پوری ضلع کے کرہل اسمبلی حلقہ سے ایم ایل اے ہیں۔ لوک سبھا انتخابات میں ایس پی کے 37 امیدوار جیت درج کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔
اکھلیش یادو کے پارلیمانی پارٹی کا لیڈر منتخب ہونے کے بعد پارٹی کے نو منتخب اراکین اسمبلی نے انہیں مبارکباد دی۔ اس دوران اکھلیش نے اپنے کارکنوں کا پورے جوش و خروش سے استقبال کیا۔ اکھلیش نے صحافیوں سے کہا کہ ایس پی ممبران اسمبلی عوام کے مفاد میں اپنے خیالات پیش کرنے کا کام کریں گے اور عوام کے درمیان رہ کر لڑیں گے۔
پی ڈی اے کی حکمت عملی پر اکھلیش یادو نے زور دے کر کہا کہ ایس پی پسماندہ، دلت اور اقلیت یعنی پی ڈی اے کی حکمت عملی پر کام کرتی رہی اور ہمیں 2024 کے انتخابات میں نتیجہ ملا ہے۔ یہاں دو طرح کے ایم پیز ہیں، جن کو سرٹیفکیٹ مل گیا ہے اور وہ جنہیں سرٹیفکیٹ نہیں ملا ہے۔ ہم ایسے دونوں ایم پیز کو ان کی جیت پر مبارکباد دیتے ہیں۔
کرہل اسمبلی سیٹ سے متعلق سوال پر اکھلیش نے کہا کہ ایس پی کا مین پوری میں طویل عرصے سے قبضہ ہے اور اسی کا نتیجہ ہے کہ ہم نے وہاں لوک سبھا الیکشن جیتا ہے۔ ایس پی ممبران پارلیمنٹ نے مجھے پارلیمانی پارٹی کا لیڈر منتخب کیا ہے۔ چچا شیو پال سنگھ یادو اور سرکردہ لیڈروں کے ساتھ بیٹھ کر مستقبل کی حکمت عملی پر تبادلہ خیال کریں گے۔