پہلوان بجرنگ پونیا کی مشکلات میں اضافہ، ناڈا نے معطل کر دیا

تاثیر۲۳      جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

نئی دہلی ،23جون:ٹوکیو اولمپکس 2020 میں کانسی کا تمغہ جیتنے والے پہلوان بجرنگ پونیا کی مشکلات ختم ہونے کے آثار نظر نہیں آ رہے ہیں۔ وہ ایک بار پھر تنازعات میں گھرے ہوئے ہیں۔ نیشنل اینٹی ڈوپنگ ایجنسی (این اے ڈی اے) نے ان پر ڈوپنگ قوانین کی خلاف ورزی کا الزام لگاتے ہوئے دوبارہ پابندی عائد کر دی ہے۔ اپریل میں ان پر این اے ڈی اے کی طرف سے پابندی بھی لگائی گئی تھی، لیکن تین ہفتے قبل اے ڈی ڈی پی نے ان کی معطلی کو اس بنیاد پر منسوخ کر دیا تھا کہ این اے ڈی اے نے پہلوان کو ‘نوٹس آف چارج’ جاری نہیں کیا تھا۔
این اے ڈی اے نے 23 اپریل کو ٹوکیو گیمز کے کانسی کا تمغہ جیتنے والے پہلوان کو مارچ میں سونی پت میں ٹرائلز کے دوران ان کے پیشاب کا نمونہ دینے سے انکار کر دیا تھا۔ اس کے بعد انہیں ڈوپنگ قوانین کی خلاف ورزی پر معطل کر دیا گیا تھا۔ اس کے بعد عالمی گورننگ باڈی یو ڈبلیو ڈبلیو نے بھی انہیں معطل کر دیا۔
بجرنگ نے معطلی کے خلاف اپیل کی تھی اور انہیں ناڈا کے ڈسپلنری ڈوپنگ پینل (اے ڈی ڈی پی ) نے 31 مئی کو منسوخ کر دیا تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ جب تک این اے ڈی اے الزامات کا نوٹس جاری نہیں کرتا، معطلی منسوخ رہے گی۔ اس کے بعد این اے ڈی اے نے کارروائی کرتے ہوئے پہلوان کو اتوار کو نوٹس بھیجا ہے۔
بجرنگ کوناڈا کا پیغام :یہ ایک رسمی نوٹس کے طور پر کام کرتا ہے کہ آپ پر نیشنل اینٹی ڈوپنگ رولز، 2021 کے آرٹیکل 2.3 کی خلاف ورزی کا الزام لگایا جا رہا ہے اور اب آپ کو عارضی طور پر معطل کر دیا گیا ہے۔’
بجرنگ کے پاس 11 جولائی تک کا وقت ہے کہ وہ سماعت کی درخواست کرے یا الزامات قبول کریں۔ این اے ڈی اے کے الزامات کے بعد، بجرنگ نے ایک بیان میں کہا تھا کہ انہوں نے کبھی بھی نمونہ دینے سے انکار نہیں کیا، لیکن صرف اپنے ای میل پر این اے ڈی اے سے جواب طلب کیا۔ اس کے علاوہ بجرنگ نے این اے ڈی اے سے بھی جواب طلب کیا تھا کہ انہوں نے اس کے نمونے لینے کے لیے میعاد ختم ہونے والی کٹس کیوں بھیجیں۔