یونیورسٹی آف کیلیفورنیا، لاس اینجلس میں فلسطینی حامی مظاہروں میں درجنوں گرفتار

تاثیر۱۲      جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

واشنگٹن، 12 جون:پولیس نے یونیورسٹی آف کیلیفورنیا، لاس اینجلس میں فلسطینی حامی مظاہرین کی ایک نیا کیمپ لگانے کی کوششیں ناکام بنا دی۔ افسران نے اس موسمِ بہار میں بھی مخالف مظاہرین کے حملے کے بعد سابقہ احتجاجی کیمپ خالی کر دیا تھا۔کیمپس کی حفاظت کے لیے یو سی ایل اے کے معاون وائس چانسلر رِک برازیل نے ایک بیان میں کہا کہ افسران نے مظاہرے کے دوران پیر کے اواخر میں 27 افراد کو گرفتار کیا۔یو سی ایل اے پولیس کے مطابق ان افراد پر یونیورسٹی کے امور میں دانستہ خلل پیدا کرنے اور ایک افسر کے کام میں مداخلت کرنے کا الزام تھا۔ انہیں 14 دن کے لیے یونیورسٹی کیمپس سے دور رہنے کے احکامات جاری کر کے رہا کر دیا گیا۔برازیل نے کہا کہ گرفتار کردہ کسی بھی طالبِ علم کو تادیبی کارروائی کا سامنا کرنا ہو گا جس میں کیمپس میں داخلے پر پابندی لگانا اور فائنل امتحان یا نئے تعلیمی سال کے آغاز کی تقریبات میں شرکت کی اجازت نہ ملنا شامل ہو سکتا ہے۔مظاہرین نے مختلف مقامات پر جا کر بار بار خیمے، شامیانے اور رکاوٹیں لگانے کی کوشش کی جس سے قریب جاری فائنل امتحانات میں خلل آیا۔ پولیس نے بتایا کہ گروپ نے ایک فوارے کو نقصان پہنچایا، اینٹوں کی روشوں کو سپرے سے پینٹ کر دیا، آگ کے حفاظتی آلات خراب کر دیئے، صحن کے فرنیچر کو نقصان پہنچایا، برقی تنصیبات سے تاریں نکال دیں اور گاڑیوں کو نقصان پہنچایا۔برازیل کے مطابق مظاہرے کے دوران ایسے حملے بھی ہوئے جن کے نتیجے میں یو سی ایل اے کے چھ پولیس اہلکار زخمی ہو گئے۔ اور ساتھ ہی ایک سکیورٹی گارڈ کے سر سے خون بہنے لگا۔برازیل نے بیان میں کہا، ”سادہ الفاظ میں غیر پر امن احتجاج کی یہ کارروائیاں ناپسندیدہ ہیں اور جاری نہیں رہ سکتیں۔”احتجاجی کیمپ امریکہ اور یورپ کے طول و عرض میں یونیورسٹی کیمپسز میں نمودار ہو گئے ہیں کیونکہ طلباء اپنی جامعات سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ اسرائیل یا اس کی جنگی کارروائیوں کی حمایت کرنے والی کمپنیوں کے ساتھ کاروبار کرنا بند کریں۔ منتظمین نے غزہ میں حماس کے خلاف اسرائیل کی جنگ کو ختم کرنے کے مطالبات کو وسعت دینے کی کوشش کی ہے جسے وہ فلسطینیوں کے خلاف نسل کشی قرار دیتے ہیں۔یو سی ایل اے کو مظاہروں اور یونیورسٹی انتظامیہ کے اس صورتِ حال سے نمٹنے کی وجہ سے بار بار پریشانی اٹھانا پڑی ہے۔ایک موقع پر فلسطینیوں کے حامی کیمپ پر مخالف مظاہرین نے حملہ کیا جس پر پولیس کی جانب سے کوئی فوری ردِعمل سامنے نہیں آیا اور کیمپ کو ہٹاتے ہی درجنوں کو گرفتار کر لیا گیا۔ اس واقعہ کی وجہ سے کیمپس پولیس چیف کی برطرفی اور ایک نئے کیمپس سیفٹی آفس کی تشکیل ہوئی۔ اس کے بعد نیا کیمپ لگانے کی کوشش کو بھی روک دیا گیا۔پیر کا احتجاج یونیورسٹی آف کیلیفورنیا کے ناظمین کی یو سی ایل اے میں ملاقات اور آئندہ ہفتے کے آخر میں شروع ہونے والی نئے تعلیمی سال کی تقریبات سے چند روز قبل سامنے آیا ہے۔