یوکرین جنگ کے بعد سے روس ایران کے ساتھ مستحکم روابط کا خواہاں

تاثیر۲۷      جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

ماسکو،27جون:کریملن نے بتایا کہ روسی صدر ولادیمیر پوتین نے بدھ کے روز ایران کے عبوری صدر محمد مخبر سے فون پر بات کی۔پوتین اور مخبر نے توانائی اور “بڑے پیمانے پر بنیادی ڈھانچے کے منصوبوں” سمیت “تمام اہم شعبہ جات میں باہمی فائدہ مند دو طرفہ تعاون” پر تبادل? خیال کیا۔
روسی توانائی کی بڑی کمپنی گیس پرام نے بدھ کے روز قومی ایرانی گیس کمپنی (این آئی جی سی) کے ساتھ ایک یادداشت پر دستخط کرنے کا اعلان کیا تھا جس کا مقصد ایران کو روسی پائپ لائن گیس فراہم کرنا ہے۔یوکرین میں حالتِ جنگ کے بعد سے روس نے ایران کے ساتھ اپنے سیاسی، تجارتی اور فوجی روابط کو مضبوط بنانے کی غرض سے ایک گہرے تعلق کے لیے قدم بڑھایا ہے جسے امریکہ اور اسرائیل تشویش کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ماسکو اور تہران امریکہ کی نقصان دہ خارجہ پالیسی کے خلاف زور لگا رہے ہیں اور ایسا عالمی نظام قائم کرنا چاہتے ہیں جو ان کے مطابق طاقت کی منصفانہ تقسیم پر مبنی ہو گا۔