آئی او اے نے پیرس جانے والے ہندوستانی کھلاڑیوں کو باضابطہ وداعی دی

تاثیر۳۰      جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

نئی دہلی، یکم جولائی : پیرس 2024 اولمپکس کے لئیجانے والے ہندوستانی کھلاڑیوں کو اتوار کی شام یہاں ایک ہوٹل میں ہندوستانی اولمپک ایسوسی ایشن (آئی او اے) کے ذریعہ منعقدہ ایک تقریب میں رسمی وداعی دی گئی ۔اس کے ساتھ ہی ہندوستانی دستے کی کٹ کی نقاب کشائی بھی کی گئی۔
نوجوانوں کے امور اور کھیل اور محنت و روزگار کے مرکزی وزیرڈاکٹر منسکھ منڈاویہ، پیٹرولیم اور قدرتی گیس کے مرکزی وزیر ہردیپ سنگھ پوری، اور انڈین اولمپک ایسوسی ایشن کے صدر اور راجیہ سبھا کی رکن، ڈاکٹر پی ٹی اوشا نے ہندوستانی ٹیم کی تین کٹس کی نقاب کشائی کی۔
پراعتماد ایتھلیٹس کی ریمپ واک نے جے ایس ڈبلیو انسپائز کے ذریعہ ڈیزائن کی گئی پلیئنگ کٹس ، ترون تہلیانی کی ملکیت والی ٹی اے ایس وی اے کے ڈیزائن کردہ رسمی لباس اور پیوما کے پرفارمنس شوز اور ٹریول گیئر سمیت کٹ کی نمائش کی گئی ۔
اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر منسکھ منڈاویہ نے کہا کہ تمام ہندوستانیوں نے ملک کے کھلاڑیوں کی محنت، لگن اور غیر متزلزل جذبے کا جشن منایا جنہوں نے سب سے بڑے اسٹیج پر ہندوستان کی نمائندگی کا اعزاز حاصل کیا ہے۔ انہوں نے کہا، ’’یہ تقریب صرف جرسیوں اور رسمی لباس کی نقاب کشائی کے بارے میں نہیں ہے، بلکہ ان اربوں ہندوستانیوں کے خوابوں اور امنگوں کی علامت ہے جو کھلاڑیوں کے پیچھے متحد ہیں۔‘‘
انہوں نے کہا،’’مجھے یقین ہے کہ یہ ٹیم کھیلوں میں ہندوستان کی ترقی کے راستے کو برقرار رکھے گی۔ ہم ریو 2016 میں دو تمغوں سے آگے بڑھ کر ٹوکیو 2020 میں سات تمغوں پر چلے گئے جس سے ہندوستان 67 ویں سے 48 ویں نمبر پر چلا گیا، جس میں بنیادی طور پر نیرج چوپڑا کے جیولین تھرو گولڈ میڈل کی مدد ملی ۔ مجھے امید ہے کہ ہمارے ایتھلیٹ اس بار میڈل ٹیبل میں ہمیں اور بھی اونچے مقام پر لے جائیں گے۔‘‘
ڈاکٹر منڈاویہ نے کہا کہ حکومت ہندوستان کو کھیلوں کی سپر پاور بنانے کی تحریک میں سب سے آگے رہی ہے۔ انہوں نے کہا،’’وزیر اعظم جناب نریندر مودی جی کی دور اندیش قیادت میں، حکومت نے مختلف اسکیموں جیسے کہ ٹارگٹ اولمپک پوڈیم اسکیم (ٹاپس ) کے ذریعے کھلاڑیوں کی مدد کی ہے، جو اعلی مقام تک پہنچنے والوں کو خصوصی مدد فراہم کرتی ہے۔‘‘
ہردیپ سنگھ پوری نے کہا کہ یہ ان کی وزارت کے لیے فخر کی بات ہے کہ وہ ہندوستان کے اولمپک کھیلوں کی حمایت کر سکتی ہے۔ انہوں نے کہا، “مجھے اس بات کی بھی خوشی ہے کہ ہمارے کئی پبلک سیکٹر کارپوریشنز کئی کھلاڑیوں کو ملازمت دیتے ہیں، جن میں پیرس جانے والے اولمپین بھی شامل ہیں۔ مجھے یقین ہے کہ ہندوستانی ٹیم پیرس میں یادگار کارکردگی پیش کرنے اور اچھی تعداد میں تمغے لے کر واپس آنے کے لیے حوصلہ مند رہے گی‘‘۔
اپنے استقبالیہ خطاب میں، ڈاکٹر اوشا نے کہا کہ انہوں نے ایک کھلاڑی کے طور پر اپنے تجربے کا استعمال اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کیا ہے کہ ہندوستان کے ایتھلیٹس کو پیرس 2024 میں اسپورٹس سائنس کے تعاون کی کمی نہیں ہوگی۔
انہوں نے کہا کہ ’’ہم نے اپنے کھلاڑیوں کو پیرس میں اپنے عروج پر پرفارم کرنے میں مدد دینے کے لیے ایک انتہائی ایتھلیٹ پر مبنی منصوبہ بنایا ہے۔ پہلی بار، آئی او اے کھلاڑیوں اور کوچنگ اور معاون عملے کو شرکت کا الاونس بھی دے گا۔ مجھے یقین ہے کہ ہندوستان پیرس سے کسی بھی اولمپکس میں اپنی بہترین کارکردگی کے ساتھ واپس آئے گا‘‘۔
بھارت اولمپکس میں تقریباً 120 کھلاڑیوں کا دستہ بھیجے گا، جس میں مردوں کے جیولن تھرو میں دفاعی چیمپئن نیرج چوپڑا کی قیادت میں ایتھلیٹکس ٹیم، 21 رکنی شوٹنگ ٹیم اور 16 رکنی مردوں کی ہاکی ٹیم شامل ہے۔