اسکل یونیورسٹی کے قیام کیلئے جنگی خطوط پر اقدامات ناگزیر : وزیراعلی

تاثیر۹  جولائی ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

حیدر آباد، 9 جولائی: وزیراعلی اے ریونت ریڈی نے عہدیداروں کوحکم دیا ہے کہ وہ ریاست میں اسکل یونیورسٹی کے قیام کیلیے جنگی خطوط پر انتظامات کریں۔ وزیراعلی نے عہدیداروں کے ساتھ ساتھ شعبہ صنعت سے وابستہ قائدین کو مشورہ دیا کہ وہ اس ماہ کے اواخر میں منعقد شدنی اسمبلی اجلاس سے ایک یادودن قبل اسکل یونیورسٹی کے قیام کیلئے واضح تجاویز تیار کرلیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت ان تجاویز کی جانچ کے بعد اندرون 24 گھنٹہ مناسب فیصلہ کرے گی۔
وزیراعلی نے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے صنعتی لیڈروں کے ساتھ آج گچی باؤلی کے انجینئرنگ اسٹاف کالج میں اسکل ڈیولپمنٹ سے متعلق جائزہ اجلاس سے خطاب کیا۔ اجلاس میں نائب وزیراعلی بھٹی وکرمارکا، وزیر آئی ٹی و صنعت سریدھر بابو اوروزیراعلی کے مشیرویم نریندرریڈی نے شرکت کی۔ وزیراعلی نے اسکل یونیورسٹی کے قیام کے متعلق عہدیداروں اور مشہور شخصیات کی آراء￿ دریافت کیں۔ وزیراعلی نے کہا کہ اگر انجینئرنگ اسٹاف کالج کے احاطہ میں اسکل یونیورسٹی قائم کی جاتی ہے تویہ بہتر ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ اس علاقہ میں یونیورسٹی کے قیام کے امکانات کا جائزہ لینا چاہئے کیونکہ یہ علاقہ تمام آئی ٹی کمپنیوں کے ساتھ ساتھ صنعتوں سے جڑا ہوا ہے۔ اجلاس میں اس بات پر تبادلہ خیال کیا گیا کہ اسکل یونیورسٹی کے قیام کے لیے آئی ایس بی کی طرز پر ایک بورڈ تشکیل دیا جائے۔ وزیراعلی نے اس اجلاس میں شرکت کرنے والے تمام نمائندوں کوایک عارضی بورڈ کی تشکیل پرغورکرنے کی ہدایت دی۔
وزیراعلی نے کہا کہ اسکل یونیورسٹی میں کون کون سے کورسس ہونے چاہیے اور کس قسم کا نصاب ہوناچاہیے۔ اس کے لئے صنعتوں کی ضروریات کا مطالعہ کیا جانا چاہیے اور ان کی ضرورت کے مطابق کورسس متعارف کروایا جانا چاہیے تاکہ نوجوانوں کو روزگار کے مواقع میسر ہوں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا ارادہ ہے کہ اس اسکل یونیورسٹی کو جدید علوم وفنون فراہم کرنے کے لیے قائم کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ مالیاتی مسائل پرنائب وزیراعلی بھٹی وکرامارکا اور آئی ٹی اور صنعت کے وزیر سریدھر بابو سے نصاب اور کورسس کے متعلق بات چیت کی جانی چاہئے۔ انہوں نے ہدایت دی کہ وہ ایک مقررہ وقت کے اندر تجاویز تیار کریں اور ہر پانچ دن بعد ملاقات کریں کیونکہ اسمبلی اجلاس کے لیے صرف 15 دن باقی ہیں۔ وزیراعلی نے عہدیداروں کوحکم دیا کہ وہ اس بات کا بھی جائزہ لیں کہ آیا اس یونیورسٹی کو حکومت اور خانگی شراکت داروں کے تعاون سے قائم کیا جاسکتا ہے؟۔ اجلاس سے قبل وزیراعلی نے انجینئرنگ اسٹاف کالج میں زیر تعمیر کنونشن سنٹر کا معائنہ کیا۔