اگنیویر یوجنا میں بہت سی خامیاں ہیں: کرنل روہت چودھری

تاثیر۴      جولائی ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

نئی دہلی، 04 جولائی:آل انڈیا کانگریس کمیٹی (اے آئی سی سی) کے سابق فوجی محکمہ کے قومی صدر کرنل روہت چودھری نے جمعرات کو کہا کہ اگنیویر اسکیم میں بہت سی خامیاں ہیں۔ یہ اسکیم فوج میں تفریق پھیلا رہی ہے، اس لیے اس اسکیم کو بند کیا جائے۔ اس کے لیے انہوں نے مرکزی حکومت سے فوج میں باقاعدہ بھرتی کرنے کی اپیل کی۔
آج کانگریس ہیڈکوارٹر میں ایک پریس کانفرنس میں کرنل روہت چودھری نے کہا کہ مرکزی حکومت نے ہر سال اگنیور اسکیم کے تحت نوجوانوں کو بھرتی کرنے کا منصوبہ بنایا تھا، لیکن اس اسکیم کے تحت صرف 50 فیصد نوجوانوں کو ہی بھرتی کیا جا رہا ہے۔ اس کی وجہ سے 2019 سے 2022 تک فوج کی تعداد میں تین لاکھ کی کمی ہوئی ہے۔
کانگریس کے سابق فوجی محکمہ کے صدر کرنل روہت نے کہا کہ اگر حالات ایسے ہی رہے تو اگلے دس سالوں میں ہماری فوج کم ہو کر صرف 8 لاکھ رہ جائے گی، جس میں سے 6 لاکھ اگنیویر ہوں گے اور باقاعدہ فوجی ہوں گے۔ صرف 2 لاکھ اس طرح ملک کی سلامتی کو داؤ پر لگایا جا رہا ہے۔
انہوں نے یہ بھی کہا کہ فائر فائٹرز کو وہ تربیت اور سہولیات نہیں مل رہی ہیں جو فوج کے جوانوں کو مل رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فوج میں باقاعدہ بھرتی کے لیے کی جانے والی ٹریننگ کے بجائے اگنیور کی ٹریننگ چھ ماہ میں مکمل کی جاتی ہے۔ جس کی وجہ سے ان کی تربیت ادھوری رہ جاتی ہے۔ جس کی وجہ سے فائر فائٹرز بھی جان کی بازی ہار رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگنیور یوجنا شروع ہونے کے بعد سے اب تک 13 اگنیویر شہید ہو چکے ہیں۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ اب تک 13 اگنیوروں میں سے ایک کو بھی پورے ایک کروڑ روپے نہیں ملے ہیں۔
کرنل روہت چودھری نے کہا کہ ہمارے لیڈر راہل گاندھی کا مطالبہ ہے کہ اس اگنیویر اسکیم کو ختم کیا جائے۔