بیرک پور وائرل ویڈیو معاملے میں جینت سنگھ کا ایک اور قریبی ساتھی گرفتار

تاثیر۱۱  جولائی ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

کولکاتا، 11 جولائی:کمرہاٹی کے ایک کلب میں ایک لڑکی کو لٹکا کر اسے بے دردی سے پیٹنے کا ویڈیو وائرل ہونے کے سلسلے میں ترنمول کے مقامی لیڈر جینت سنگھ کے ایک اور ساتھی کو گرفتار کیا گیا ہے۔ اس کا نام پرسن داس عرف لالٹو ہے۔ اسے جمعرات کی صبح گرفتار کیا گیا۔ بیرک پور پولیس کمشنریٹ ذرائع کے مطابق لالٹو سے پوچھ گچھ کی جارہی ہے۔
حال ہی میں وائرل ہونے والی ایک ویڈیو میں نظر آرہا ہے کہ ایک نوجوان خاتون کو برہنہ کر کے اسے تشدد کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ مذکورہ ویڈیو میں لالٹو بھی شرمناک حرکت کرتا ہوا نظر آرہا ہے ۔ حالانکہ اس ویڈیو کی صداقت کی تصدیق نہیں ہوسکی ہے تاہم یہ ویڈیو منظر عام پر آتے ہی پولیس نے تحقیقات شروع کردی ہیں۔ تاہم یہ ویڈیو کس تاریخ کی ہے ابھی تک واضح نہیں ہے۔
لالٹو کی گرفتاری کے بعد اب تک اس ویڈیو سکینڈل میں جینت کے کل سات ساتھیوں کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔ بیرک پور پولیس کمشنر آلوک راجوریا نے صحافیوں کو بتایا کہ جینت کے چھ ساتھیوں کو پہلے ہی گرفتار کیا جا چکا ہے اور باقی ملزمان کی تلاش جاری ہے۔
وائرل ویڈیو میں نظر آ رہا ہے کہ ایک لڑکی کو اس کے ہاتھ -پیر باندھ کرلٹکا دیا گیا ہے اور بے دردی سے مار جا رہا ہے ۔ مغربی بنگال بی جے پی نے بھی اسے پوسٹ کیا اور حکومت سے فوری تحقیقات اور انصاف کا مطالبہ کیا۔ اس کے جواب میں ترنمول کانگریس نے کہا کہ یہ ویڈیو مارچ 2021 کا ہے اور اس میں دکھائے گئے ملزمان جینت سنگھ اور اس کے ساتھی ہیں۔ پولیس نے اس بات کی بھی تصدیق کی کہ یہ ویڈیو فروری-مارچ 2021 کی ہے۔