بی جے پی کا ٹی ایم سی پر حملہ، نڈا نے کہا۔مغربی بنگال خواتین کے لیے غیر محفوظ

تاثیر۳۰      جون ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

نئی دہلی، یکم جولائی: بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے مغربی بنگال میں ایک نوجوان جوڑے کی وحشیانہ پٹائی پر ریاست کی ترنمول کانگریس (ٹی ایم سی) حکومت پر حملہ کیا ہے۔ بی جے پی نے کہا ہے کہ مغربی بنگال خواتین کے لیے غیر محفوظ ہے۔ اس کے بارے میں پیر کو بی جے پی صدر جے پی نڈا نے ایکس پر ایک پوسٹ شیئر کرتے ہوئے الزام عائد کیا کہ مغربی بنگال خواتین کے لیے محفوظ نہیں ہے۔
نڈا نے کہا، ’’مغربی بنگال سے ایک ہولناک ویڈیو سامنے آئی ہے، جو ہمیں ان ظلموں کی یاد دلاتا ہے جو صرف تھیوکریسی میں موجود ہیں۔ سب سے افسوسناک بات یہ ہے کہ ترنمول کارکنان اور ایم ایل اے اس واقعہ کو جواز بنا رہے ہیں۔خواہ سندیشکھالی ہو، اتر دیناج پور ہو یا کئی دوسری جگہیں، دیدی کا مغربی بنگال خواتین کے لیے غیر محفوظ ہے‘‘۔
قابل ذکر ہے کہ اتوار کو مغربی بنگال سے ایک شرمناک ویڈیو سامنے آئی ہے، جس میں ایک شخص سڑک کے بیچوں بیچ ایک جوڑے کو سب کے سامنے بے دردی سے پیٹتا نظر آرہا ہے۔ اس خوفناک ویڈیو میں وہاں موجود لوگ خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔ مبینہ طور پر یہ واقعہ شمالی بنگال کے شمالی دیناج پور ضلع کے چوپڑا میں ہفتے کے آخر میں پیش آیا۔ بتایا جا رہا ہے کہ نوجوان اور لڑکی دونوں کو ناجائز تعلقات کے مبینہ الزام میں بری طرح مارا پیٹا گیا۔ بنگال پولیس نے اتوار کو کیس درج کرنے کے بعد ملزم کو گرفتار کر لیا ہے۔