سماج کو ڈاکٹر، انجینئر، آفیسر کے ساتھ ساتھ اچھے انسان کی بھی ضرورت ہے: ڈاکٹر تسلیم عارف

تاثیر۲      جولائی ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

گل کمپنی ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر سوسائٹی (جگتدل) کے زیر اہتمام تعلیمی مذاکرہ اور استقبالیہ تقریب
(رپورٹ: محمد شاہد حسین، جگتدل) شمالی چوبیس پرگنہ کے جگتدل کے مشہور سماجی اور فلاحی ادارہ گل کمپنی ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر سوسائٹی نے گذشتہ اتوار، 30 جون کی شب ایک ایجوکیشنل کانفرنس اور مدھیامک ہائر سکنڈری امتحانات میں امتیازی نمبروں سے پاس ہونے والے اسٹوڈنٹس کے لئے استقبالیہ تقریب کا اہتمام کیا جس میں کلکتہ اور مضافات کے ماہرین تعلیم نے شرکت کی۔ تقریب کی صدارت مولانا آزاد کالج کے پوسٹ گریجویٹ شعبہ اردو کے صدر ڈاکٹر دبیر احمد نے کی۔ مہمانان اعزازی کے طور پر جگتدل اسمبلی حلقہ کے ایم ایل اے شری سومناتھ شیام اور ویسٹ بنگال اسٹیٹ یونیورسٹی کے شعبہ ¿ اردو کے صدر ڈاکٹر تسلیم عارف شریک ہوئے جبکہ مقررین میں معروف شاعر ادیب جناب عظیم انصاری، شری راج کمار تیواری (ایڈمنسٹریٹر، جگتدل ٹاﺅن اسکول)، ڈاکٹر رمیش یادو (صدر، شعبہ ہندی، مہارانی کاشیشوری کالج) اور جناب سوز اختر شامل تھے۔ پروگرام کا آغاز قومی ترانہ سے ہوا۔ بعد ازاں مہمانان کا تعارف کرایا گیا اور سبھی کی خدمت میں ادارہ کی جانب سے تحفے پیش کئے گئے۔ مقرر سوز اختر نے بچّوں کی کامیابی کے پیچھے والدہ کی کوششوں کی سراہنا کی اور ایک طویل نظم ’ماں‘ کے زیر عنوان سنائی۔ معروف شاعر اور ادیب جناب عظیم انصاری نے بھی تعلیم کی اہمیت اور افادیت سے اسٹوڈنٹس کو روشناس کرایا اور گارجین حضرات کو مشورہ دیا کہ وہ اپنے بچّے بچّیوں کی کامیابی پر سب سے پہلے اُن کی حوصلہ افزائی کریں۔ شری راج کمار تیواری اور ڈاکٹر رمیش یادو نے اپنی تقریر میں ادارہ کے کارناموں کی سراہنا کرتے ہوئے کہا کہ بڑی مسرت کی بات ہے کہ یہ ادارہ بلا تفریق مذہب و ملت، ہر سال مدھیامک اور ہائر سکنڈری کے امتحانات میں اسٹوڈنٹس کی شاندار کارکردگی پر عوامی پذیرائی کرتا ہے۔ علاقے کے ایم ایل اے اپنی مصروفیت کے سبب تاخیر سے جلسے میں آئے اور اپنے مختصر سے خطاب میں انھوں نے کہا کہ ہمارے علاقے میں اس نوعیت کے پروگرام ذرا کم ہوتے ہیں۔ مقام شکر ہے کہ گل کمپنی ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر سوسائٹی ہر سال پابندی سے اس طرح کی تقریب کا اہتمام کرتی ہے۔ شری سومناتھ شیام نے مزید کہا کہ اگر علاقے کے بچوں کو تعلیم کے حصول میں کسی طرح کی بھی دقت پیش آتی ہے تو وہ براہ راست مجھ سے رجوع کریں۔ میں اُن کی ہر ممکن مدد کروں گا۔ ڈاکٹر تسلیم عارف نے اپنی تقریر میں کہا کہ دور حاضر میں سماج اور معاشرے کو ڈاکٹر، انجینئر، آفیسر کے ساتھ ساتھ اچھے انسان کی بھی سخت ضرورت ہے۔ انھوں نے اسٹوڈنٹس کو مشورہ دیا کہ آپ اپنی تعلیم کو مقصد کے تحت حاصل کریں۔ آپ کا سب سے اہم مقصدشاندار مستقبل ہونا چاہےے۔ آج سماج میں جس طرح کی منافرت پھیلتی جارہی ہے ، آپ کو ان منافرت کو مٹانے کے لئے بھی کوشش کرنی ہوگی۔ آپ کی ذمہ داریوں میں یہ بھی شامل ہونا چاہےے۔ صدر جلسہ ڈاکٹر دبیر احمد نے اپنے خطاب میں فرمایا کہ مجھے بڑی مسرت ہورہی ہے کہ مضافات میں گل کمپنی ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر سوسائٹی جیسا ادارہ موجود ہے جس کے اراکین بنا کسی ستائش تمنا اور صلے کی پروا کے، اپنے علاقے کے اسٹوڈنٹس کی کامیابی پر انہیں اس قدر شاندار ستقبالیہ دیتے ہیں۔ دبیر احمد نے مزید کہا کہ تحفہ اہم نہیں ہے بلکہ ایک تقریب منعقد کرکے اس میں اسٹوڈنٹس کی کامیابی کی سراہنا کرنا ، انہیں ہمت دینا اور ان کی حوصلہ افزائی کرنا ، یہ سب سے بڑی بات ہے۔ یقینا اس سے موجودہ اسٹوڈنٹس اور بعد کے اسٹوڈنٹس کو زبردست تقویت ملے گی۔ دبیر احمد نے جلسہ گاہ میں موجود تمام اسٹوڈنٹس سے فی البدیہہ ایک سوال پوچھا اور ایک لڑکی کی جانب سے صحیح جواب ملنے پر، اُسے اپنی جانب سے ایک ہزار روپئے نقد انعام کے طور پر دیا۔ واضح ہو کہ اس تقریب میں جگتدل اور اس کے نواحی علاقوں کے اردو اور ہندی میڈیم اسکولز سے امسال مدھیامک اور ہائر سکنڈری کے امتحانات میں امتیازی نمبروں سے پاس ہونے والے اسٹوڈنٹس کثیر تعداد میں موجود تھے، جنھیں ادارہ کی جانب سے سند، مومنٹو ، فائل اور دیگر تحائف پیش کئے گئے۔ آر بی سی کالج فار وومین (نئی ہٹی) کے گیسٹ لیکچرار ڈاکٹر محمد علی حسین شائق نے نظامت کے فرائض انتہائی حسن و خوبی کے ساتھ انجام دیے اور پروگرام کے آغاز تا اختتام، سامعین کو محفل کے ساتھ باندھے رکھا۔ گل کمپنی ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر سوسائٹی (جگتدل) کے اراکین سمیر خان، زاہد حسین، چاند محمد (بے بی بھائی)، محمد عالمگیر عالم، محمد معراج عالم، محمد جاوید حسین، محمد شاہد حسین، رحیم الدین خان اور محمد پرویز عالم پروگرام کو کامیاب بنانے میں پیش پیش رہے۔