ضلع اردو زبان سیل ارریہ کے زیرِ اہتمام انعامی تقریری مسابقہ۔

 

میٹرک، انٹر، گریجویشن اور اس کے مساوی زمروں میں محمد راغب عالم، عزرا عاطفہ اور غلام نبی نے فرسٹ پوزیشن حاصل کر انعامات سے سرفراز۔          

ارریہ:- ( مشتاق احمد صدیقی ) گزشتہ کل اردو ڈائریکٹوریٹ محکمہ کابینہ سکریٹریٹ حکومت بہار کی ہدایت پر ضلع اردو زبان سیل ارریہ کے زیرِ اہتمام ضلع ہیڈکوارٹر کے قلب میں واقع ٹاؤن ہال میں انعامی تقریری مسابقہ کا انعقاد ہوا، جس کی صدارت سینیئر اردو صحافی اور ضلع کا واحد اقلیتی تعلیمی ادارہ “آزاد اکیڈمی” کے سائنس ٹیچر ارشد انور الف نے کی جبکہ مہمان خصوصی کی حیثیت محمد وسیم احمد صاحب ضلع تحویل اراضی آفیسر ارریہ شریک پروگرام ہوئے۔اس تقریری مسابقہ کا افتتاح صدرِ مسابقہ، مہمانانِ خصوصی اور تینوں حضرات حکم پروفیسر رفیع حیدر انجم، پروفیسر زاہد الرحمٰن اور صحافی مشتاق احمد صدیقی نے مشترکہ طور پر شمع روشن کرکےکیا اور ضلع اردو زبان سیل کے اردو مترجم محمد تعظیم احمد ندوی نے خطبۂ استقبالیہ پیش کرتے ہوئے مہمان خصوصی، کے تمام مہمانانِ اعزازی، حضرات حکم صاحبان اور صدر مسابقہ سمیت جملہ اساتذۂ کرام اور شرکائے مسابقہ کا شاندار استقبال کرتے ہوئے انہیں خوش آمدید کہا پھر آپ نے مسابقہ کے تمام شرکاء کو تقریر پیش کرنے کے اصول وضوابط سمیت رقم انعامات کی تفصیلات کو ان کے سامنے رکھا۔ اس موقع پر مہمانانِ خصوصی جناب محمد وسیم احمد صاحب تحویل اراضی آفیسر ارریہ نے اس پروگرام میں موجود لوگوں سے کہا کہ اردو کی بقا کے لئے ہر شخص کو اپنا کردار ادا کرنا چاہئے۔ائمہ مساجد کو اپنے خطبوں میں اس کی اہمیت اجاگر کرنا چاہئے۔مساجد میں اردو تعلیم کے مراکز قائم کئے جانے چاہئے۔اگر سو دوسو روپے ماہانہ خرچ کرکے اردو کی تعلیم حاصل کی جاسکتی ہو تو برا کیا ہے۔ایک سال یومیہ ایک گھنٹہ صرف کرنے سے اچھی خاصی اردو سیکھی جاسکتی ہے۔اپنے گھروں میں اردو پڑھنے والا موجود ہو تو وہ باقی افراد کو اردو پڑھائے،بلکہ دوچار پڑوسیوں کو بھی پڑھائے۔مگر آج ہماری خواتین اور بہنوں کو سوشل میڈیا اور ہندوستانی ڈرامے دیکھنے سے فرصت نہیں ہے،بھلا اردو پڑھنے پڑھانے کے لیے وقت کہاں سے لائیں، آپ نے کہا کہ بلاکوں سے لے کر ضلع تک کے تمام دفاتر میں اردو کے مترجم موجود ہیں، مگر اس کے باوجود اردو داں حضرات کی جانب سے اردو میں درخواستیں موصول نہیں کرائی جاتی ہیں۔ آپ نے کہا کہ صرف یہ کہنے سے اردو کی ترویج ممکن نہیں ہے کہ ہمیں اردو سے محبت گئی اور ہندی خوبصورت ہوگئی، بلکہ ہمیں اردو کو آپسی بول چال میں رواج دینے کی ضرورت ہے جبکہ صدرِ مسابقہ نے اردو کے تعلق سے کہا اردو ہے جس کا نام ہمیں جانتے ہیں داغ۔ سارے جہاں میں دھوم ہماری زبان کی ہے۔ آپ نے کہا کہ اردو زبان گنگا جمنی تہذیب کی علمبردار ہے۔ اس لئے ہم لوگوں نے پورے ارریہ شہر میں گھوم گھوم کر خصوصاً دکاندار بھائیوں سے اپیل کیا تھا کہ آپ انکریزی یا ہندی کے ساتھ دکان کےب رڈ پر اردو بھی لکھیں، تاکہ فروغِ اُردو میں آپ کاحصہ بھی شامل ہو۔ آپ نے کہا مذہبی معلومات کی کتابیں زیادہ تر اردو زبان میں ہے، جس کی جانکاری کے لئے اردو سیکھنا اور سکھانا وقت کی اہم ضرورت ہے آپ کے علاوہ تینوں حضراتِ حکم صاحبان نے بھی اپنے اپنے خیالات کااظہار کیا۔ اور تقریری مسابقہ کے پہلے زمرے میں محمد راغب عالم نے فرسٹ عقبیٰ ثانیہ اور افضل اقبال نے مشترکہ طور پر سکنڈ جبکہ محمد حسن اور زینب خاتون نے مشترکہ طور پر تھرڈ پوزیشن حاصل کیا جبکہ انٹر اور اس کے مساوی مسابقہ میں عزرا فاطمہ نے فرسٹ صائمہ پروین اور نثار احمد نے مشترکہ طور پر سکنڈ روشنی اور زینت پروین نے مشترکہ طور پر تھرڈ پوزیشن حاصل کیا جبکہ گریجویشن زمرے میں غلام نبی نے فرسٹ دانش عالم نے سکنڈ اور منظر عالم نے تھرڈ پوزیشن حاصل کیا۔ ان خوش نصیبوں کو مسابقہ کے کنوینر اور ضلع اردو زبان سیل کے انچارج آفیسر جناب ساودھ صاحب اور تینوں ججیز کے مبارک ہاتھوں سے مومنٹو دیکر اعزاز بخشا گیا اور ان سے کہا گیا کہ انعامات کی رقم تمام فاتحین کے ذاتی اکاؤنٹ پر ضلع انتظامیہ جانب سے سینڈ کردی جائے گی۔ اس صوبائی حوصلہ افزائی منصوبہ برائے اردو داں طلبہ و طالبات 2023۔ 24 کے تقریری مسابقہ پروگرام کی حسن نظامت کے فرائض کو مشکور عالم اردو مترجم بلاک آفس فاربس گنج، انور حسین اردو مترجم بلاک آفس جوکی ہاٹ اور محمد اسرار الحق اردو مترجم بلاک آفس پلاسی نے مشترکہ طور پر انجام دیا جبکہ ضلع اردو زبان سیل کے زیرِ اہتمام منعقدہ مسابقہ پروگرام کو کامیابی سے ہمکنار کرانے کے لئے پروگرام کے انچارج تعظیم احمد ندوی اردو مترجم کلیکٹرییٹ ارریا، ولی اللہ اعلی درجہ کلرک اردو بلاک ارریا صدر، محترمہ شہناز بیگم اعلی درجہ کلرک اردو سب ڈیزل آفس،ارریا، محترمہ سلمہ رحمانی اردو مترجم سب ڈویژنل آفسر ارریا، محمد اسرار الحق اردو مترجم بلاک دفتر پلاسی، محمد منہاج عالم اردو مترجم بلاک دفتر رانی گنج، مشکور عالم اردو مترجم بلاک دفتر فاروبسگنج، انور حسین اردو مترجم بلاک دفتر جوکی ہارٹ، محترمہ خوشبو دلکش اردو مترجم بلاک دفترارریہ، عارض حسین کلرک اردو بلاک دفتر پلاسی،  آصف اقبال کلرک بلاک دفتر جو کی ہارٹ، راہب اختر کلرک بلاک دفتر فاربسگنج نے اہم رول ادا کیا۔ آخر میں پروگرام کے انچارج اور اردو مترجم کلیکٹریٹ ارریا محمد تعظیم احمد ندوی نے تمام مہمانوں کا دل کی گہرائیوں سے شکریہ ادا کیا۔