ضلع پروگرام نفاذ کمیٹی کے زیرِ اہتمام ہوئی جائزہ اجلاس منعقد

 

سرکاری اسکیموں کو زمین پر نافذ کرنے کے لیے تمام محکموں کو مل کر کرنا ہے کام،وزیرِ انچارج 
سیتا مڑھی (مظفر عالم)
سرکاری اسکیموں کو زمین پر نافذ کرنے کے لیے تمام محکموں کو آپس میں مل کر کام کرنا چاہیے۔  کئے جانے والے کام میں مکمل شفافیت ہونی چاہئے اور  کام مقررہ معیار کے مطابق ہو۔
یہ بات  اشوک چودھری وزیر، دیہی امور کے محکمہ کے چیئرمین-سہ سیتا مڑھی انچارج وزیر، ضلع پروگرام نفاذ کمیٹی نے مختلف محکموں کی جائزہ اجلاس میں کہی۔ وزیرِ انچارچ  نے کہا کہ سکیموں کے نفاذ میں غفلت کسی صورت میں برداشت نہیں کی جائے گی تمام افسران اپنی ذمہ داریاں پوری دیانت داری سے کریں۔  اپنی ذمہ داریاں پوری دیانت داری اور تندہی کے ساتھ نبھائیں اور حکومت کی ترقیاتی اور فلاحی اسکیموں کو عملی جامہ پہنانے میں اپنا کردار ادا کریں تاکہ عام لوگ ان سے مستفید ہوسکیں۔ اجلاس میں  وزیر انچارج کی طرف سے ہدایت دی گئی کہ ضلع میں پرائیویٹ نرسنگ ہوم اور الٹرا ساؤنڈ سنٹر کی ٹیم بنا کر چھان بین کی جائے۔  انہوں نے کہا کہ غیر مجاز یا بغیر لائسنس کے چلنے والے نرسنگ ہوم یا الٹرا ساؤنڈ سنٹر کی چھان بین کی جائے، انہوں نے سول سرجن کو ہدایت کی کہ تحقیقات کے بعد ان نرسنگ ہوم الٹراساؤنڈ سنٹر کے خلاف قواعد کے مطابق قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے۔جب عوامی نمائندوں نے اوقات کار میں بجلی کی سپلائی میں کمی اور بجلی کی کٹوتی کا معاملہ اٹھایا تو وزیر نے بجلی کی مسلسل دستیابی کو یقینی بنانے کی سخت ہدایت دی۔ خاص طور پر پوپری میں بجلی کی فراہمی میں کمی کا مسئلہ عوامی نمائندوں نے اٹھایا۔ خستہ حال تاروں کو فوری طور پر ہٹانے کی ہدایت بھی دی گئی، پبلک ڈسٹری بیوشن سسٹم کی دکانوں میں فراہم کیے جانے والے اناج کا معیار ٹھیک نہ ہونے اور دستیاب اناج کا وزن کم ہونے کی شکایت موصول ہونے پر وزیر نے ہدایت کی کہ متعلقہ سب ڈویژنل افسران اور سب ڈویژنل پولیس افسران مشترکہ طور پر اس بات کو یقینی بنائیں گے۔ باقاعدہ چھاپے مارے جائیں ۔  انہوں نے واضح طور پر کہا کہ اگر فراہم کردہ اناج کے معیار میں کوئی کوتاہی پائی گئی تو متعلقہ محکمہ کے افسران کارروائی کریں گے۔اجلاس میں عوامی نمائندوں کی جانب سے ضلع کی سڑکوں کی حالت زار کے حوالے سے سوالات اٹھائے گئے جس پر  وزیر انچارج نے آر ڈبلیو ڈی اور آر سی ڈی کے انجینئر کو ہدایت کی کہ وہ ایسی سڑکوں کی فہرست حاصل کریں اور ٹریفک کی بحالی کے لیے ترجیحی بنیادوں پر کام کریں۔ انہوں نے آر سی ڈی اور آر ڈبلیو ڈی کے عہدیداروں کو سخت لہجے میں ہدایت دی کہ جو سڑکیں خراب ہیں ان کی فوری مرمت کی جائے، جہاں اپروچ سڑکیں تعمیر کرنے کی ضرورت ہے، انہیں فوری طور پر تعمیر کیا جائے اور مہادلت بستیوں تک رابطہ سڑکوں کی تعمیر کو بھی یقینی بنایا جائے۔ محکمہ تعلیم کے جائزہ کے دوران سکولوں میں باؤنڈری وال کی تعمیر، ہینڈ پمپس کی تنصیب اور بینچ/ڈیسک وغیرہ کی فراہمی کے حوالے سے موصول ہونے والی شکایت کی روشنی میں عوامی نمائندوں سے انکوائری کرنے کی ہدایت دی گئی۔  آنگن واڑی مراکز کا اچانک معائنہ کرنے کی بھی بات ہوئی۔ایگزیکٹو انجینئر پی ایچ ای ڈی کو ہدایت کی گئی کہ وہ نلکے کے پانی کی سکیموں کو فوری طور پر منتقل کر کے مزید کارروائی کریں جو ابھی تک پی ایچ ای ڈی کو منتقل نہیں کی گئی ہیں۔ اجلاس میں سیتامڑھی شہر میں صفائی کے مناسب انتظامات نہ ہونے کی وجہ سے انہوں نے میونسپل کمشنر کو اس سمت میں موثر کام کو یقینی بنانے کی سخت ہدایت دی تاکہ لوگوں کو پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔  خصوصی مہم چلا کر پانی بھرنے کا مسئلہ دور کرنے کی ہدایت۔ساتھ ہی محکمہ صحت کو صدر اسپتال سمیت دیگر اسپتالوں میں طبی انتظامات مزید سخت کرنے کی ہدایت کی گئی۔ تمام عہدیداروں کو ممکنہ سیلاب کے حوالے سے الرٹ رہنے کی بھی ہدایت دی گئی۔ ضلع میں سڑکوں کی تعمیر کا بھی جائزہ لیا گیا اور اس سلسلے میں ہدایت دی گئی کہ متعلقہ ٹیکنیکل محکمے اس سلسلے میں ضروری کارروائی کو یقینی بنائیں تاکہ ضلع میں سفری سہولیات کو مزید بہتر بنایا جا سکے۔ آئی سی ڈی ایس کا جائزہ لینے کے لیے ڈی پی او کو مسلسل فیلڈ وزٹ کرنے کی سخت ہدایت دی گئی۔  عوام الناس کے مسائل کے حل کے لیے اپنی ذمہ داریاں سنجیدگی سے نبھائیں۔ اس کے علاوہ محکمہ زراعت کی بہبود، اقلیتی بہبود، ذریعہ معاش، ماہی پروری، معمولی آبی وسائل اور دیگر محکموں کا بھی اجلاس میں جائزہ لیا گیا۔ مذکورہ اجلاس میں نومنتخب ایم پی دیویش چندر ٹھاکر، قانون ساز کونسل کی ممبر  ریکھا کماری،  قانون ساز اسمبلی  متھیلیش کمار، موتی لال پرساد،  پنکج مشرا، گایتری موج دیوی،   انیل کمار، دلیپ رائے، ضلع کونسل کی صدر ادیتی کماری، میئر رونق جہاں پرویز، شیوہر  ایم پی کے نمائندے  ناگیندر پرساد سنگھ، مختلف بلاک کے  سربراہان، دیگر عوامی نمائندے، ضلع افسر رچی پانڈے۔ ، سپرنٹنڈنٹ آف پولیس منوج کمار تیواری، ڈپٹی ڈیولپمنٹ کمشنر منن رام، تمام سب ڈویژنل افسران، تمام بلاک ڈیولپمنٹ افسران، تمام سرکل افسران، تمام سی ڈی پی او، تمام بلاک کے نوڈل افسران کے ساتھ تمام تکنیکی محکموں کے ایگزیکٹو انجینئر موجود تھے۔