عالیہ نیلم لاہور ہائی کورٹ کی پہلی خاتون چیف جسٹس ہوں گی

تاثیر۳      جولائی ۲۰۲۴:- ایس -ایم- حسن

اسلام آباد ، 03 جولائی: پاکستان میں پہلی بار کوئی خاتون چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ کے عہدے پر فائز ہونے جا رہی ہے۔ جوڈیشل کمیشن آف پاکستان (جے سی پی) نے منگل کو متفقہ طور پر جسٹس عالیہ نیلم کی ترقی کو منظوری دے دی۔ اس کے ساتھ ہی عالیہ نیلم لاہور ہائی کورٹ کی چیف جسٹس کے عہدے تک پہنچنے والی پہلی خاتون کے طور پر تاریخ رقم کرنے کو تیار ہیں۔چیف جسٹس آف پاکستان (سی جے پی) قاضی فائز عیسیٰ کی سربراہی میں جے سی پی نے قائم مقام چیف جسٹس شجاعت علی خان اور جسٹس علی بکر نجفی سمیت تین ججوں کو لاہور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کے عہدے پر ترقی دینے کی منظوری دے دی۔
جے سی پی نے متفقہ طور پر جسٹس شفیع صدیقی کو چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ کے عہدے پر ترقی دینے کی بھی سفارش کی تاکہ جسٹس عقیل احمد عباسی کی سپریم کورٹ میں تعیناتی سے خالی ہونے والی نشست کو پْر کیا جاسکے۔ 7 جون کو لاہور ہائیکورٹ کے چیف جسٹس کا عہدہ جسٹس ملک شہزاد احمد خان کی سپریم کورٹ میں تعیناتی کے بعد خالی ہو گیا جس کے بعد جسٹس شجاعت علی خان کو لاہور ہائیکورٹ کا قائم مقام چیف جسٹس مقرر کیا گیا۔جسٹس عالیہ نیلم لاہور ہائیکورٹ کے ججوں کی سنیارٹی لسٹ میں تیسرے نمبر پر ہیں۔ اپنی 7 جون کی میٹنگ کے دوران، جے سی پی نے لاہور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس کے عہدے کے لیے ان کی نامزدگی پر غور کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ ایک تاریخی سنگ میل میں جسٹس سیدہ طاہرہ صفدر جسٹس محمد نور مسکانزئی کی ریٹائرمنٹ کے بعد 2018 میں بلوچستان ہائی کورٹ کی چیف جسٹس کے عہدے پر فائز ہونے والی پہلی خاتون بنی تھیں۔ اس کے بعد ایک اور تاریخی کارنامہ اس وقت حاصل ہوا جب جسٹس عائشہ اے ملک 2021 میں سپریم کورٹ میں تعینات ہونے والی پہلی خاتون جج بنی تھیں۔