میچی ندی کے کٹاؤ سے گاؤں والے پریشان۔

 

ٹھاکر گنج (محیط حسن رضا)
ٹھاکر گنج بلاک علاقے کے تحت چرلی پنچایت کے کرلی کوٹ کھٹکھتی، نیگراڈوبا اور دیگر گاؤں میچی ندی کے کٹاؤ کی وجہ سے خطرے میں ہیں۔ مقامی لوگوں نے ضلع پریشد کے نمائندے احمد حسین کو ندی کے کٹاؤ کی اطلاع دی جس کے بعد انہوں نے  ندی کٹاؤ کا معائنہ کیا اور فوری طور پر ایس ڈی ایم اور سرکل آفیسر سے فون پر بات کی اور پورے واقعہ کی تفصیلی جانکاری دی۔ اس کے بعد سرکل آفیسر سچیتا کماری نے خود اس مقام پر ندی کے کٹاؤ کا باریک بینی سے معائنہ کیا، جس کے بعد انہوں نے مقامی گاؤں والوں کو یقین دلایا کہ بہت جلد ندی کے کٹاؤ کے روک تھام  کا کام کیا جائے گا۔  اس دوران ضلع پریشد کے نمائندے احمد حسین نے کہا کہ ہم خود ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ اور ڈیزاسٹر آفیسر کو خط لکھ کر پشتوں کی تعمیر کا مطالبہ کریں گے۔ اس سے پہلے بھی اس نے افسر کو ٹیلی فون پر ہی اطلاع دی تھی۔ افسروں نے ہدایت کے بعد بوری میں ریت بھر کر کٹاؤ والی جگہ پر ڈال کر ندی کے کٹاؤ کو روکنے کے لیے کارروائی کی۔  ندی کے تیزی سے کٹاؤ کے باعث لوگوں میں خوف کی فضا ہے۔ مقامی لوگوں محمد اسرارالحق، مشتاق عالم وغیرہ نے بتایا کہ نیپال حکومت کی جانب سے بولڈر پچنگ کی وجہ سے میچی ندی کا رخ اب کرلی کوٹ کھٹکھتی نینگرا ڈوبا کی طرف بڑھ رہا ہے۔ دیہاتیوں نے بتایا کہ دریا کے کٹاؤ کی وجہ سے دیہاتیوں کی سینکڑوں ایکڑ اراضی دریا میں ضم ہو گئی ہے، مقامی لوگوں نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ دریا کے کٹاؤ کو روکا جائے تاکہ سرحدی سڑک کو تباہ ہونے سے بچایا جا سکے۔